عنوان: اعتکاف کی حالت میں مسجد سے باہر کھانے کے لئے جانا کیسا ہے؟(107179-No)

سوال: میں رمضان میں عمرہ کے لئے جارہا ہو اور وہیں مسجد میں آخری عشرہ میں اعتکاف کے لئے بیٹھوں گا، میں نے سنا ہے کہ وہاں کھانے کا بندو بست نہیں ہوتا ہے، یہ بتادیں کہ کیا مجھے اعتکاف کی حالت میں مسجد سے باہر نکل کر ہوٹل میں کھانا کھانے کے لئے جانے کی اجازت ہوگی؟

جواب: واضح رہے کہ اعتکاف کی حالت میں ضرورتِ طبعیہ اور شرعیہ کے لئے مسجد سے باہر نکلنا جائز ہے، لہذا صورت مسئولہ میں اعتکاف میں بیٹھنے کی صورت میں اگر واقعی مسجد میں کھانا کھانے کا بندوبست نہ ہوسکے، تو معتکف کو کھانا کھانے کے لئے مسجد سے باہر مجبورا بقدرِ ضرورت جانے کی اجازت ہوگی، البتہ ضرورت سے زیادہ مسجد سے باہر ٹھہرنا یا بار بار باہر جانا شرعاََ جائز نہیں ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی حاشیۃ الطحطاوی علی مراقی الفلاح:

(ولا یخرج منہ)… الا لحاجۃ شرعیۃ… (او) حاجۃ (طبیعیۃ) (او) حاجۃ و(ضروریۃ)… وفی الظھیریۃ وقیل: یخرج بعد الغروب للاکل والشرب…الخ

(وقیل: یخرج بعد الغروب للاکل والشرب) قال فی البحر ینبغی حملہ علی ما اذا لم یجد من یاتی لہ بہ فحینئذٍ یکون من الحوائج الضروریۃ۔

(ج: 1، ص: 702، 704، ط: دار الكتب العلمية)

وفی التاتارخانیۃ:

ولا یخرج المعتکف من معتکفہ لیلا ولانہارا الا بعذر … وقیل یخرج بعد الغروب للاکل والشرب… واما فی الاعتکاف النفل فلا بأس بان یخرج بعذر وبغیر عذر۔

(ج: 1، ص: 411، 412، 413)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Views: 52

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Aitikaf

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com