عنوان: روزے کی حالت میں دانتوں کی روٹ کینال اور فلنگ کروانے کا حکم(107216-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب! کیا روزے کی حالت میں دانتوں کی فلنگ یا روٹ کینال کرائی جا سکتی ہے؟ جزاک اللہ خیرا

جواب: روزے کی حالت میں دانتوں کی روٹ کینال اور فلنگ کے دوران، عام طور پر پانی کے قطرے حلق سے اتر جانے کا قوی اندیشہ ہوتا ہے، جس سے روزہ ٹوٹ جاتا ہے۔
لہٰذا بہتر یہ ہے کہ روزہ کے بعد ہی یہ عمل کرایا جائے، البتہ اگر شدید مجبوری ہو، جس کی وجہ سے یہ عمل کروایا جائے اور پانی حلق سے نیچے نہ اترے، تو روزہ نہیں ٹوٹے گا اور اگر اس صورت میں پانی حلق سے نیچے اتر جائے تو روزہ ٹوٹ جائے گا، اور اس روزے کی قضا لازم ہوگی۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

لما فی الدر المختار:

"(وکرہ) لہ (ذوق شییٔ و)کذا (مضغہ بلا عذر)… وکرہ (مضغ علک) أبیض ممضوغ ملتئم وإلا فیفطر)
وفی الشامیۃ تحتہ :
(قولہ وکرہ مضغ علک) نص علیہ مع دخولہ فی قولہ وکرہ ذوق شیٔ ومضغہ بلا عذر لأن العذر فیہ لا یتضح فذکر مطلقا بلا عذر اھتمامارملی… (قولہ أبیض الخ) قیدہ بذالک لأن الأسود وغیر الممضوغ وغیر الملتئم یصل منہ شییٔ إلی الجوف واطلق محمد المسألۃ وحملھا الکمال تبعاً للمتاخرین علی ذالک للقطع بأنہ معلل بعدم الوصول فان کان مما یصل عادۃ حکم بالفساد لأنہ کالمتیقن".

(الدر المختار مع رد المحتار:٢/٤١٦)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی



Print Views: 35

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Sawm (Fasting)

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com