عنوان: کیا نابالغ بچہ پر نذر کو پورا کرنا واجب ہے؟(7499-No)

سوال: میرے چھ سال کے بچہ نے نذر مانی تھی کہ اگر وہ امتحان میں پہلے نمبر پر آیا، تو تین دن کے روزے رکھے گا اور وہ امتحان میں اللہ کے فضل سے پہلے نمبر پر آگیا، تو کیا اس پر تین دن کے روزے رکھنا ضروری ہیں؟

جواب: واضح رہے کہ نابالغ بچہ شریعت کے احکام کا مکلف نہیں ہوتا ہے، لہذا اگر کوئی بچہ کسی بات پر نذر مان لے اور وہ بات پوری ہوجائے، تو اس نابالغ بچہ پر نذر کو پورا کرنا واجب نہیں ہوگا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

بدائع الصنائع: (81/5، ط: دار الكتب العلمية)
أما الذي يتعلق بالناذر فشرائط الأهلية:
(منها) العقل. (ومنها) البلوغ، فلا يصح نذر المجنون والصبي الذي لا يعقل، لأن حكم النذر وجوب المنذور به، وهما ليسا من أهل الوجوب

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 555
kia nabaaligh bachay par nazar ko pora karna waajib hai?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Ruling of Oath & Vows

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.