عنوان: قبروں پر چادریں چڑھانا کیسا ہے؟(7507-No)

سوال: مفتی صاحب ! بعض لوگ بزرگوں یا عام مردوں کی قبروں پر چادریں چڑھاتے ہیں، سوال یہ ہے کہ قبروں پر چادریں چڑھانا کیسا ہے؟

جواب: واضح رہے کہ بزرگوں یا عام مردوں کی قبروں پر چادریں چڑھانا شرعا ناجائز ہے، کیونکہ یہ ایک عبث اور بےکار کام ہے، اس سے مردہ کو کوئی فائدہ نہیں پہنچتا ہے اور اس میں اسراف یعنی فضول خرچی بھی پائی جاتی ہے، اس لئے اس سے اجتناب کرنا ضروری ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

القرآن الکریم: (الانعام، الآیۃ: 141)
وَ لَا تُسۡرِفُوۡا ؕ اِنَّہٗ لَا یُحِبُّ الۡمُسۡرِفِیۡنَo

رد المحتار: (238/2، ط: دار الفکر)
تکرہ الستور علی القبور۔

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 345
qabron par chadairan charhana kaisa hai?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Funeral & Jinaza

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.