عنوان: کیا دو بھائیوں میں سے ایک بھائی کا کسی عورت سے اور دوسرے بھائی کا اس عورت کی بیٹی سے نکاح کرنا جائز ہے؟(7579-No)

سوال: ہمارے علاقہ میں ایک مطلقہ عورت اپنی جوان بیٹی کے ساتھ رہتی ہے اور ان کا کوئی سر پرست نہیں ہے، میں اس عورت سے نکاح کرنا چاہتا ہوں، جبکہ میرا چھوٹا بھائی اس عورت کی بیٹی سے نکاح کرنا چاہتا ہے، کیا میرا اس عورت سے اور میرے بھائی کا اس عورت کی بیٹی سے نکاح کرنا جائز ہے؟

جواب: صورتِ مسئولہ میں آپ کا مذکورہ عورت سے اور آپ کے چھوٹے بھائی کا اس عورت کی بیٹی سے نکاح کرنا جائز ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

القرآن الکریم: (النساء، الآیۃ: 24)
وَاُحِلَّ لَكُم مَّا وَرَاءَ ذٰلِكُمْ۔۔۔۔الخ

الدر المختار مع رد المحتار: (31/3، ط: دار الفکر)
وأما بنت زوجة أبيه أو ابنه فحلال ۔
(قوله: وأما بنت زوجة أبيه أو ابنه فحلال) وكذا بنت ابنها بحر. قال الخير الرملي: ولا تحرم بنت زوج الأم ولا أمه ولا أم زوجة الأب ولا بنتها ولا أم زوجة الابن ولا بنتها ولا زوجة الربيب ولا زوجة الراب. اه.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 946 May 21, 2021
kia do bhaion mai say aik bhai ka kisi aourat say or doosray bhai ka as aourat ki beti say nikkah karna jaiz hai?, Is it permissible for one of two brothers to marry a woman and the other brother to marry that woman's daughter?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Nikah

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.