عنوان: کیا رمضان میں تنہا نمازِ عشاء پڑھنے والا شخص وتر باجماعت پڑھ سکتا ہے؟(107720-No)

سوال: اگر کسی نے رمضان میں عشاء کی نماز جماعت سے نہ پڑھی ہو، تو کیا وہ وتر با جماعت پڑھ سکتا ہے؟

جواب: جی ہاں! رمضان میں تنہا عشاء کی نماز پڑھنے والا شخص وتر کی نماز با جماعت پڑھ سکتا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی حاشیۃ طحطاوی علی الدر المختار:

قولہ فلیراجع قضیۃ التعلیل فی المسئلۃ السابقۃ بقولھم لانھا تبع أن یصلی الوتر بجماعۃ فی ھذہ الصورۃ لانہ لیس بتبع للتراویح ولا للعشاء عند الامام رحمہ اللہ تعالیٰ انتھیٰ حلبی۔

(ج: 10، ص: 297)

وفی حلبی کبیری:

واذا لم یصل الفرض مع الامام فعن عین الائمۃ الکرابیسی انہ لا یتبعہ فی التراویح ولا فی الوتر وکذا اذا لم یتابعہ فی التراویح لا یتابعہ فی الوتر، وقال ابویوسف البانی اذا صلی مع الامام شیئا من التراویح یصلی معہ الوتر وکذا اذا لم یدرک معہ شیئا منھا وکذا اذا صلی التراویح مع غیرہ لہ ان یصلی الوتر معہ وھو الصحیح ذکرہ ابو اللیث وکذا قال ظھیر الدین المرغینانی الخ۔

(ص: 410)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Print Full Screen Views: 261
kia ramzan mai tanha namaz e esha parhne wala shakhs witar bajamaat parh sakta hai?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Taraweeh Prayers

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.