عنوان: کیا اللہ تعالیٰ سے دولت مانگنا جائز ہے؟(108208-No)

سوال: مفتی صاحب ! کیا اللہ سے دولت مانگنا جائز ہے؟

جواب: قرآن مجید میں اللہ تعالیٰ کا فرمان ہے:
وَاسْأَلُوا اللَّهَ مِن فَضْلِهِ (الآیۃ)

ترجمہ:
اللہ تعالیٰ سے اس کے فضل کا سوال کرو۔

اس آیت اور اس کے علاوہ کئی احادیث مبارکہ سے یہ بات واضح ہوتی ہے کہ انسان کو اپنی تمام ضرورتیں اور حاجتیں چاہے وہ مال ودولت ہی کیوں نہ ہو، اللہ تعالیٰ سے ہی مانگنا چاہیے، یہاں تک کہ اگر جوتے کا تسمہ بھی ٹوٹ جائے، تو وہ بھی اللہ تعالیٰ ہی سے مانگنا چاہیے، کیونکہ اللہ تعالیٰ اپنے سے مانگنے والوں کو پسند کرتا ہے اور جو اللہ تعالیٰ سے نہیں مانگتے، اللہ تعالیٰ ان کو پسند نہیں کرتا، ہاں ! اتنی بات ضرور ہے کہ اللہ تعالیٰ سے کسی ناجائز چیز کا سوال کرنا درست نہیں ہے۔

دلائل:

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


القرآن الکریم:(سورۃالنساء،الایۃ:32)
وَاسْأَلُوا اللَّهَ مِن فَضْلِهِ

جامع الترمذی:(رقم الحدیث:3604،ط:دارالغرب الاسلامی،بیروت)
عن أنس، قال: قال رسول الله صلى الله عليه وسلم: ليسأل أحدكم ربه حاجته كلها حتى يسأل شسع نعله إذا انقطع.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 267
kia allah taala say doolat mangna jaiz hai?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Azkaar & Supplications

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.