عنوان: ایام حیض میں نکاح کرنا(8338-No)

سوال: مفتی صاحب ! کیا حیض کی حالت میں نکاح کرنا جائز ہے؟

جواب:
نکاح کے وقت اگر عورت حالت حیض میں ہو، تو دو گواہوں کی موجودگی میں ایجاب و قبول کرنے سے نکاح منعقد ہوجائے گا، چوںکہ حالتِ حیض میں جماع (ہمبستری )کرنا جائز نہیں ہے، اس لیے جب عورت حیض کے ایام میں ہو، تو رخصتی کرنا احتیاط کے خلاف ہے، اور اگر کسی مجبوری سے اسی حالت میں رخصتی ہو جائے، تو شوہر کے لیے اس وقت تک جماع جائز کرنا نہیں ہے، جب تک کہ عورت پاک نہ ہوجائے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

القرآن الکریم: (البقرۃ، الآیۃ: 222)
فَاعْتَزِلُوا النِّسَاءَ فِي الْمَحِيضِ وَلَا تَقْرَبُوهُنَّ حَتَّى يَطْهُرْن....الخ

فتاوی عثمانی: (267/2، ط: مکتبہ معارف القرآن)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 605 Sep 09, 2021
ayyame heiz me / may nikah karna

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Nikah

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.