عنوان: اونٹ کی قربانی میں دس یا ستر افراد کا شریک ہونا(8472-No)

سوال: کیا اونٹ کی قربانی میں دس یا ستر افراد شریک ہوسکتے ہیں؟

جواب: یاد رہے کہ اونٹ کی قربانی میں زیادہ سے زیادہ سات افراد شریک ہوسکتے ہیں، اگر کسی اونٹ میں سات سے زیادہ افراد شریک ہوگئے تو ساتویں حصے سے کم میں شریک ہونے کی وجہ سے کسی بھی شریک کی قربانی درست نہ ہوگی۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

صحیح مسلم: (بَابُ الِاشْتِرَاكِ فِی الْهَدي وَإِجْزَاء الْبَقَرَةِ …الخ، رقم الحدیث: 1318)
أَنَّ النَّبِیَّ صَلَّی اللهُ عَلَیْهِ وَسَلَّمَ قَالَ: الْبَقَرَةُ عَنْ سَبْعَةٍ، وَالْجَزُورُ عَنْ سَبْعَةٍ۔

بدائع الصنائع: (70/5)
'' ولا يجوز بعير واحد ولا بقرة واحدة عن أكثر من سبعة، ويجوز ذلك عن سبعة أو أقل من ذلك، وهذا قول عامة العلماء.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 1013 Sep 25, 2021
camel / ont / ount ki qurbani me das / 10 ya sattar / 70 afrad ka shareek hona?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Qurbani & Aqeeqa

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.