عنوان: تین طلاق کا نوٹس دینا(108567-No)

سوال: اگر قانونی طور پر شوہر اپنی بیوی کو طلاق دینا چاہتا ہے تو اسے ہر مہینے ایک نوٹس طلاق کا لکھ کے بھیجنا ہوتا ہے، اگر کوئی شخص پہلے نوٹس میں تین مرتبہ طلاق لکھ دے تو کیا ایک طلاق ہوگی یا تینوں طلاقیں ہوجائیں گی؟

جواب: اگر کسی شخص نے طلاق کا نوٹس دیتے ہوئے تین طلاقوں کا نوٹس لکھ دیا، تو اس صورت میں شرعا تین طلاقیں واقع ہو جائیں گی۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

سورة البقرة:(رقم الآیۃالایۃ230)
فَاِنْ طَلَّقَہَا فَلَا تَحِلُّ لَہُ مِنْ بَعْدُ حَتَّی تَنْکِحَ زَوْجًا غَیْرَہ الخ۔

تفسیر روح المعانی:(سورۃ البقرہرقم الآیۃ:230)
"فإن طلقہا‘‘ متعلقا بقولہ سبحانہ ’’الطلاق مرتان‘‘ …… فلاتحل لہ من بعد‘‘ أي من بعد ذلک التطلیق ’’حتی تنکح زوجاًغیرہ‘‘ أي تتزوج زوجا غیرہ ویجامعہا"۔

سنن أبی داوٴد:(باب في اللعان، رقم: 2250)
عن سہل بن سعد قال :فطلقہا ثلاث تطلیقات عند رسول اللّٰہ صلی اللّٰہ علیہ وسلم ، فأنفذہ رسول اللّٰہ صلی اللّٰہ علیہ وسلم الخ۔

فتاویٰ الھندیۃ:(1/473 ط: دار الفكر)
"وَإِنْ كَانَ الطَّلَاقُ ثَلَاثًا فِي الْحُرَّةِ وَثِنْتَيْنِ فِي الْأَمَةِ لَمْ تَحِلَّ لَهُ حَتَّى تَنْكِحَ زَوْجًا غَيْرَهُ نِكَاحًا صَحِيحًا وَيَدْخُلَ بِهَا ثُمَّ يُطَلِّقَهَا أَوْ يَمُوتَ عَنْهَا، كَذَا فِي الْهِدَايَةِ"۔

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 118

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Divorce

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com