عنوان: "کلما تزوجت فھی طالق" کے حلف نامہ کا شرعی حکم(108597-No)

سوال: میں "کلما تزوجت فھی طالق" کی قسم کھاتا ہوں کہ اکیڈمی میں پڑھانے کے دوران یا اکیڈمی چھوڑنے کے بعد اکیڈمی کے کسی طالب علم سے نہ خود اور نہ ہی کسی کے ذریعہ رابطہ نہیں رکھوں گا، خواہ وہ کسی بھی طریقہ سے ہو، اگر ایسا کیا تو مجھ پر اس قسم کا اطلاق ہوگا۔ مفتی صاحب ! کیا ایسا کرنے سے طلاق واقع ہو جائے گی اور کیا ایسا حلف کسی سے لینا ٹھیک ہے؟

جواب: سوال میں ذکر کردہ حلف نامہ میں "کلما تزوجت فھی طالق" ( یعنی جب جب بھی میں شادی کروں تو میری بیوی کو طلاق) کے الفاظ کا اقرار کرنے سے معاہدہ کرنے والے کے ذمہ یہ معاہدہ لازم ہو جائے گا، اور معاہدہ کی خلاف ورزی کرنے کی صورت میں معاہدہ کرنے والا جب بھی نکاح کرے گا، تو اس کی بیوی پر طلاق واقع ہوجائے گی۔

واضح رہے کہ اپنے ماتحتوں کو کسی قانون کا پابند بنانے کے لیے ان سے "کلما" کی طلاق کے ساتھ مشروط حلف لینا مناسب نہیں ہے، اگر شدید ضرورت ہو، تو اس کے بجائے اللہ تعالیٰ کے نام کی قسم لی جاسکتی ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
الدلائل:

بدائع الصنائع:(47/3،ط:دار الکتب العلمیۃ)
ﻭﺃﻣﺎ اﻟﺤﻠﻒ ﻋﻠﻰ اﻟﻜﻼﻡ ﻓﺎﻟﻤﺤﻠﻮﻑ ﻋﻠﻴﻪ ﻭﻫﻮ اﻟﻜﻼﻡ ﻗﺪ ﻳﻜﻮﻥ ﻣﺆﺑﺪا، ﻭﻗﺪ ﻳﻜﻮﻥ ﻣﻄﻠﻘﺎ، ﻭﻗﺪ ﻳﻜﻮﻥ ﻣﺆﻗﺘﺎ، ﺃﻣﺎ اﻟﻤﺆﺑﺪ ﻓﻬﻮ ﺃﻥ ﻳﺤﻠﻒ ﺃﻥ ﻻ ﻳﻜﻠﻢ ﻓﻼﻧﺎ ﺃﺑﺪا ﻓﻬﻮ ﻋﻠﻰ اﻷﺑﺪ ﻻ ﺷﻚ ﻓﻴﻪ، ﻷﻧﻪ ﻧﺺ ﻋﻠﻴﻪ.
ﻭﺃﻣﺎ اﻟﻤﻄﻠﻖ ﻓﻬﻮ ﺃﻥ ﻳﺤﻠﻒ ﺃﻥ ﻻ ﻳﻜﻠﻢ ﻓﻼﻧﺎ ﻭﻻ ﻳﺬﻛﺮ اﻷﺑﺪ ﻭﻫﺬا ﺃﻳﻀﺎ ﻋﻠﻰ اﻷﺑﺪ ﺣﺘﻰ ﻟﻮ ﻛﻠﻤﻪ ﻓﻲ ﺃﻱ ﻭﻗﺖ، ﻛﻠﻤﻪ ﻓﻲ ﻟﻴﻞ ﺃﻭ ﻧﻬﺎﺭ ﻭﻓﻲ ﺃﻱ ﻣﻜﺎﻥ ﻛﺎﻥ ﻭﻋﻠﻰ ﺃﻱ ﺣﺎﻝ ﺣﻨﺚ؛ ﻷﻧﻪ ﻣﻨﻊ ﻧﻔﺴﻪ ﻣﻦ ﻛﻼﻡ ﻓﻼﻥ ﻟﻴﺒﻘﻰ اﻟﻜﻼﻡ ﻣﻦ ﻗﺒﻠﻪ ﻋﻠﻰ اﻟﻌﺪﻡ، ﻭﻻ ﻳﺘﺤﻘﻖ اﻟﻌﺪﻡ ﺇﻻ ﺑﺎﻻﻣﺘﻨﺎﻉ ﻣﻦ اﻟﻜﻼﻡ ﻓﻲ ﺟﻤﻴﻊ اﻟﻌﻤﺮ۔

الدر المختار ورد المحتار:( 352/3،ط:دار الفکربیروت)
(ﻭﻓﻴﻬﺎ) ﻛﻠﻬﺎ (ﺗﻨﺤﻞ) ﺃﻱ ﺗﺒﻄﻞ (اﻟﻴﻤﻴﻦ) ﺑﺒﻄﻼﻥ اﻟﺘﻌﻠﻴﻖ (ﺇﺫا ﻭﺟﺪ اﻟﺸﺮﻁ ﻣﺮﺓ ﺇﻻ ﻓﻲ ﻛﻠﻤﺎ ﻓﺈﻧﻪ ﻳﻨﺤﻞ ﺑﻌﺪ اﻟﺜﻼﺙ) ﻻﻗﺘﻀﺎﺋﻬﺎ ﻋﻤﻮﻡ اﻷﻓﻌﺎﻝ ﻛﺎﻗﺘﻀﺎء ﻛﻞ ﻋﻤﻮﻡ اﻷﺳﻤﺎء (ﻓﻼ ﻳﻘﻊ ﺇﻥ ﻧﻜﺤﻬﺎ ﺑﻌﺪ ﺯﻭﺝ ﺁﺧﺮ ﺇﺫا ﺩﺧﻠﺖ) ﻛﻠﻤﺎ (ﻋﻠﻰ اﻟﺘﺰﻭﺝ ﻧﺤﻮ: ﻛﻠﻤﺎ ﺗﺰﻭﺟﺖ ﻓﺄﻧﺖ ﻛﺬا) ﻟﺪﺧﻮﻟﻬﺎ ﻋﻠﻰ ﺳﺒﺐ اﻟﻤﻠﻚ ﻭﻫﻮ ﻏﻴﺮ ﻣﺘﻨﺎﻩ.
(ﻗﻮﻟﻪ:ﻟﺪﺧﻮﻟﻬﺎ ﻋﻠﻰ ﺳﺒﺐ اﻟﻤﻠﻚ): ﺃﻱ اﻟﺘﺰﻭﺝ، ﻓﻛﻠﻤﺎ ﻭﺟﺪ ﻫﺬا اﻟﺸﺮﻁ ﻭﺟﺪ ﻣﻠﻚ اﻟﺜﻼﺙ ﻓﻴﺘﺒﻌﻪ ﺟﺰاﺅﻩ، ﺑﺤﺮ۔

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Divorce

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com