عنوان: شوہر کے دل میں محبت پیدا کرنے کے لئے وظیفہ(108715-No)

سوال: مفتی صاحب ! میرے شوہر غصہ کے بہت تیز ہیں، زرا زرا سی بات پر مار پیٹ کرنے لگتے ہیں، چھ مہینے سے اپنی امی کے گھر بیٹھی ہوئی ہوں، میں اپنی زندگی سے بہت پریشان ہوگئی ہوں، براہ کرم مجھے پڑھنے کو کچھ دیں کہ میرے شوہر مجھے عزت دینے لگ جائیں۔

جواب: 1) بکثرت استغفار پڑھا کریں، کیونکہ حدیث شریف میں آتا ہے: حضرت ابن عباس رضی اللہ تعالی عنہما سے روایت ہے کہ آپ ﷺ نے ارشاد فرمایا: "جو کوئی استغفار کو لازم کرلے، اللہ تعالی اس کے لئے ہر تنگی سے نکلنے کا راستہ نکال دیتا ہے، اور اور ہر غم سے خلاصی دے دیتا ہے، اور اللہ تعالی اس کو ایسی جگہ سے روزی دیتا ہے کہ وہ گمان بھی نہیں کرتا۔"
(سنن ابی داؤد،رقم الحدیث:1518)

کم از کم تین سو مرتبہ صبح اور تین سو مرتبہ شام میں استغفار کرنے کا اہتمام کریں۔

2) صلاة الحاجة پڑھنے کا اہتمام کیا جائے، حدیث میں ہے:
"جس کسی کو کوئی حاجت در پیش ہو، خواہ اللّٰہ سے یا لوگوں سے، تو اسے چاہیے کہ (خوب اچھی طرح) وضو کرے، پھر دو رکعت نماز پڑھے، اس کے بعد اللہ تعالیٰ کی حمد و ثنا کرے، اور درود شریف پڑھے، پھر یہ دعا کرے":

'' لَا اِلٰـهَ اِلَّا اللّٰهُ الْحَلِیْمُ الْکَرِیْمُ، سُبْحَانَ اللّٰهِ رَبِّ الْعَرْشِ الْعَظِیْمِ، اَلْحَمْدُ لِلّٰهِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ، اَسْئَلُکَ مُوْجِبَاتِ رَحْمَتِکَ، وَعَزَائِمَ مَغْفِرَتِکَ، وَالْعِصْمَةَ مِنْ کُلِّ ذَمنْبٍ، وَالْغَنِیْمَةَ مِنْ کُلِّ بِرٍّ، وَّالسَّلَامَةَ مِنْ کُلِّ إِثْمٍ، لَا تَدَعْ لِیْ ذَنْبًا إِلَّا غَفَرْتَه وَلَا هَمًّا إِلَّا فَرَّجْتَه وَلَا حَاجَةً هِيَ لَکَ رِضًا إِلَّا قَضَیْتَهَا یَا أَرْحَمَ الرّٰحِمِیْنَ )''۔
(جامع الترمذی،رقم الحدیث:479)

3) اپنی وسعت کے مطابق صدقہ دینے کا اہتمام کریں، کیونکہ صدقہ بلاؤں اور مصیبتوں کو ٹالتا ہے، حدیث میں ہے:
حضرت ابن عمر رضی اللہ عنہما سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: "صدقہ دو اور اپنے مریضوں کا صدقے کے ذریعے علاج کرو، اس لیے کہ صدقہ پریشانیوں اور بیماریوں کو دور کرتا ہے اور وہ تمہارے اعمال اور نیکیوں میں اضافے کا سبب ہے"۔
(شعب الإيمان،رقم الحدیث:3278)

ان باتوں کا اہتمام کریں، ان شاء اللہ ! اللہ تعالی آپ کے شوہر کے دل میں آپ کے لئے الفت و محبت پیدا فرمادیں گے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
الدلائل:

القرآن المجید:(سورۃالغافر،الایۃ:60)
وَقَالَ رَبُّكُمُ ادْعُونِي أَسْتَجِبْ لَكُمْ ؕ۔۔۔۔۔الخ

سنن ابی داؤد:(85/2،ط:المکتبۃالعصریۃ)
وعنِ ابْنِ عَبَّاسٍ رضِي اللَّه عنْهُما قَال: قالَ رَسُولُ اللَّهِ ﷺ: منْ لَزِم الاسْتِغْفَار، جَعَلَ اللَّه لَهُ مِنْ كُلِّ ضِيقٍ مخْرجًا، ومنْ كُلِّ هَمٍّ فَرجًا، وَرَزَقَهُ مِنْ حيْثُ لاَ يَحْتَسب".

سنن ابن ماجۃ:(441/1،ط:داراحیاءالکتب العربیۃ)
عن عبد الله بن أبي أوفى الأسلمي، قال: خرج علينا رسول الله صلى الله عليه وسلم فقال: " من كانت له حاجة إلى الله، أو إلى أحد من خلقه، فليتوضأ وليصل ركعتين، ثم ليقل: لا إله إلا الله الحليم الكريم، سبحان الله رب العرش العظيم، الحمد لله رب العالمين، اللهم إني أسألك موجبات رحمتك، وعزائم مغفرتك، والغنيمة من كل بر، والسلامة من كل إثم، أسألك ألا تدع لي ذنبا إلا غفرته، ولا هما إلا فرجته، ولا حاجة هي لك رضا إلا قضيتها لي، ثم يسأل الله من أمر الدنيا والآخرة ما شاء، فإنه يقدر "

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 212

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Azkaar & Supplications

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.