عنوان: کیا لڑکی سے نکاح کی اجازت لیتے وقت نکاح کا خطبہ پڑھنا ضروری ہے؟(8878-No)

سوال: مفتی صاحب ! کیا نکاح میں لڑکی سے اجازت لیتے وقت بھی خطبہ پڑھنا لازمی ہے؟ براہ کرم رہنمائی فرمادیں۔

جواب: نکاح کے وقت نکاح کا خطبہ پڑھنا مسنون ہے، فرض یا واجب نہیں ہے، لہذا لڑکی سے اجازت لیتے وقت نکاح کا خطبہ پڑھنا ضروری نہیں ہے، نیز خطبہ کا مستحب وقت یہ ہے کہ ایجاب و قبول سے پہلے نکاح کا خطبہ پڑھا جائے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الدر المختار: (8/3)
"و يندب إعلانه و تقديم خطبة و كونه في مسجد يوم جمعة بعاقد رشيد."

الفقہ الاسلامی و ادلته: (6617/9، ط: دار الفکر)
والمستحب خطبة واحدة لما تقدم لا خطبتان اثنتان: إحداهما من العاقد، والأخرى من الزوج قبل قبوله لأن المنقول عنه ﷺ وعن السلف خطبة واحدة، وهوأولى ما اتبع۔

کذا فی فتاویٰ بنوری تاؤن، رقم الفتوی: 144205200355

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 623 Dec 01, 2021
kia larki / girl se / say nikah ki ejazat lete waqt nikah ka khutba parhna zarorey he / hay?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Nikah

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.