عنوان: جنات کے شر سے حفاظت کے لیے اعمال و وظائف(9535-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب! اگر کسی لڑکی پر جنات وغیرہ ہونے کا شک ہو، تو اس کے لیے کوئی وظیفہ بتادیں۔ جزاک اللہ خیراً

جواب: جنات کے شر سے حفاظت کے لیے مندرجہ ذیل اعمال کا اہتمام کرنا چاہیے:
1) کسی بھی مشکل کے حل کے لیے ہر مسلمان کو نماز اور دعاؤں کا خوب اہتمام کرنا چاہیے۔
قرآن مجید میں اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے کہ:
اے ایمان والو ! صبر اور نماز سے مدد حاصل کرو، بیشک اللہ صبر کرنے والوں کے ساتھ ہے۔
(سورۃ البقرۃ: آیت نمبر: 153)
حدیث مبارکہ میں ہے کہ دعا مؤمن کا ہتھیار ہے۔ (زوائد ابی یعلیٰ الموصلی، رقم الحدیث:1675 )
لہذا جنات کے شر سے محفوظ رہنے کے لیے صلاۃ الحاجۃ کا اہتمام کرنا چاہیے اور اس کے بعد خوب اللہ تعالیٰ سے جنات کے شر سے حفاظت کی دعا مانگنی چاہیے۔
نمازِ حاجت کا مسنون طریقہ یہ ہے کہ آدمی اچھی طرح وضو کرنے کے بعد دو رکعت نفل نماز صلوۃ الحاجۃ کی نیت سے پڑھے، نماز سے فارغ ہوکر پہلے اللہ تعالی کی حمد و ثنا بیان کرے، پھر حضور صلی اللہ علیہ وسلم پر درود بھیجنے کے بعد حسبِ ذیل دعا پڑھے:
لاَ إِلَهَ إِلاَّ اللَّهُ الحَلِيمُ الكَرِيمُ، سُبْحَانَ اللهِ رَبِّ العَرْشِ العَظِيمِ، الحَمْدُ لِلَّهِ رَبِّ العَالَمِينَ، أَسْأَلُكَ مُوجِبَاتِ رَحْمَتِكَ، وَعَزَائِمَ مَغْفِرَتِكَ، وَالغَنِيمَةَ مِنْ كُلِّ بِرٍّ، وَالسَّلاَمَةَ مِنْ كُلِّ إِثْمٍ، لاَ تَدَعْ لِي ذَنْبًا إِلاَّ غَفَرْتَهُ، وَلاَ هَمًّا إِلاَّ فَرَّجْتَهُ، وَلاَ حَاجَةً هِيَ لَكَ رِضًا إِلاَّ قَضَيْتَهَا يَا أَرْحَمَ الرَّاحِمِينَ.
2) گھر میں معتدل آواز میں سورۃ البقرۃ پڑھنے کا اہتمام کریں۔
3) حضرت شیخ الحدیث مولانا زکریا کاندھلوی صاحب رحمۃ اللہ علیہ کی تالیف "منزل" کو بھی روزانہ پڑھنے کا اہتمام کرنا چاہیے، مذکورہ "منزل" قرآنی آیات پر مشتمل ہے اور قرآن کریم کا جسمانی و روحانی امراض کے لئے باعثِ شفاء ہونا، قرآن وحدیث سے ثابت ہے اور یہ"منزل" ہمارے اکابر کے مجربات میں سے ہے۔
4) اس کے ساتھ ساتھ صبح وشام کی حفاظت کی مسنون دعائیں بھی پڑھنی چاہیے۔
5) کثرتِ استغفار اور صدقہ دینے کا بھی اہتمام کریں۔
6) مندرجہ ذیل کلمات پڑھنا بھی جنات کے شر سے حفاظت کے لیے مجرب ہے، لہذا یہ کلمات بھی بکثرت پڑھنے چاہیے:
أَعُوْذُ بِوَجْهِ اللهِ الْعَظِيْمِ الَّذِيْ لَيْسَ شَيْءٌ أَعْظَمَ مِنْهُ، وَبِكَلِمَاتِ اللهِ التَّامَّاتِ الَّتِيْ لَايُجَاوِزُهُنَّ بَـرٌّ وَّلَا فَاجِرٌ، وَبِأَسْمَآءِ اللهِ الْحُسْنىٰ كُلِّهَا مَا عَلِمْتُ مِنْهَا وَمَا لَمْ أَعْلَمْ، مِنْ شَرِّ مَا خَلَقَ وَذَرَأَ وَبَرَأَ۔
ان مذکورہ بالا اعمال کی برکت سے ان شاء اللہ مریض کو شفا ہوگی۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

القرآن الکریم: (البقرۃ، الآية: 153)
یٰۤاَیُّہَا الَّذِیۡنَ اٰمَنُوا اسۡتَعِیۡنُوۡا بِالصَّبۡرِ وَ الصَّلٰوۃِ ؕ اِنَّ اللّٰہَ مَعَ الصّٰبِرِیۡنَo

سنن الترمذی: (603/1، ط: دار الغرب الاسلامي)
عن عبد الله بن أبي أوفى، قال: قال رسول الله صلى الله عليه وسلم: من كانت له إلى الله حاجة، أو إلى أحد من بني آدم فليتوضأ وليحسن الوضوء، ثم ليصل ركعتين، ثم ليثن على الله، وليصل على النبي صلى الله عليه وسلم، ثم ليقل: لا إله إلا الله الحليم الكريم، سبحان الله رب العرش العظيم، الحمد لله رب العالمين، أسألك موجبات رحمتك، وعزائم مغفرتك، والغنيمة من كل بر، والسلامة من كل إثم، لا تدع لي ذنبا إلا غفرته، ولا هما إلا فرجته، ولا حاجة هي لك رضا إلا قضيتها يا أرحم الراحمين.

صحیح مسلم: (رقم الحديث: 1874)
حَدَّثَنِي الْحَسَنُ بْنُ عَلِيٍّ الْحُلْوَانِيُّ حَدَّثَنَا أَبُو تَوْبَةَ وَهُوَ الرَّبِيعُ بْنُ نَافِعٍ حَدَّثَنَا مُعَاوِيَةُ يَعْنِي ابْنَ سَلَّامٍ عَنْ زَيْدٍ أَنَّهُ سَمِعَ أَبَا سَلَّامٍ يَقُولُ حَدَّثَنِي أَبُو أُمَامَةَ الْبَاهِلِيُّ قَالَ سَمِعْتُ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَقُولُ اقْرَءُوا الْقُرْآنَ فَإِنَّهُ يَأْتِي يَوْمَ الْقِيَامَةِ شَفِيعًا لِأَصْحَابِهِ اقْرَءُوا الزَّهْرَاوَيْنِ الْبَقَرَةَ وَسُورَةَ آلِ عِمْرَانَ فَإِنَّهُمَا تَأْتِيَانِ يَوْمَ الْقِيَامَةِ كَأَنَّهُمَا غَمَامَتَانِ أَوْ كَأَنَّهُمَا غَيَايَتَانِ أَوْ كَأَنَّهُمَا فِرْقَانِ مِنْ طَيْرٍ صَوَافَّ تُحَاجَّانِ عَنْ أَصْحَابِهِمَا اقْرَءُوا سُورَةَ الْبَقَرَةِ فَإِنَّ أَخْذَهَا بَرَكَةٌ وَتَرْكَهَا حَسْرَةٌ وَلَا تَسْتَطِيعُهَا الْبَطَلَةُ قَالَ مُعَاوِيَةُ بَلَغَنِي أَنَّ الْبَطَلَةَ السَّحَرَةُ

اتحاف المهرة: (رقم الحديث: 25038)
ط- لولا كلمات أقولهن لجعلتني يهود حماراً... الحديث مالك في الجامع، عن سمي مولي أبي بكر عن القعقاع ابن حكيم  أن كعب الأحبار قال... فذكره.

الأسماء و الصفات، للبيهقي: (رقم الحديث: 676، ط: مكتبة السوادي)
عن القعقاع بن حكيم، قال: إن كعب الأحبار قال: لولا كلمات أقولهن لجعلتني يهود حماراً. فقيل له: ما هي؟ فقال: أعوذ بوجه الله العظيم الذي ليس شيء أعظم منه، وبكلمات الله التامات التي لا يجاوزهن بر ولا فاجر، وبأسماء الله الحسنى كلها ما علمت منها وما لم أعلم، من شر ما خلق وذرأ وبرأ.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 588
jinnat / jinat k / kay shar se / say hifazat k / kay liye aamal / amaal wa wazaef / wazaif

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Azkaar & Supplications

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.