عنوان: سرمیں پتھر لگنے یا دماغ میں کیڑے ہونے کی وجہ سے چکرانے والی بکری کی قربانی کا حکم (9542-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب! ایک بکری ہے، وہ کبھی کبھار اپنی جگہ پر چکرا جاتی ہے، یعنی اس کو چکر آتے ہیں، تو کچھ دیر اپنی جگہ پر گھوم جاتی ہے، اب یہ چکر کا آنا یا تو سر پر پتھر لگنے کی وجہ سے ہے یا اس کے دماغ کے اندر کیڑا ہے، باقی وہ بکری پہاڑ جاکر چرتی ہے، نظر بھی بالکل ٹھیک ہے، لیکن پتھر لگنے یا دماغ میں کیڑے کی وجہ سے گھومنے لگتی ہے، تو ایسی بکری کی قربانی جائز ہے یا نہیں؟ رہنمائی فرمائیں۔

جواب: سرمیں پتھر لگنے یا دماغ میں کیڑے ہونے کی وجہ سے چکرانے والی بکری کی قربانی جائز ہے، بشرطیکہ اس کا مرض اس حد تک نہ پہنچا ہو کہ وہ اس کی وجہ سے خود چارہ نہ کھا سکے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

بدائع الصنائع: (75/5، ط: دار الكتب العلمية)
وتجوز الثولاء وهي المجنونة إلا إذا كان ذلك يمنعها عن الرعي والاعتلاف فلا تجوز لأنه يفضي إلى هلاكها فكان عيبا فاحشا.

الدر المختار: (323/6، ط: دار الفكر)
(ويضحي بالجماء والخصي والثولاء) أي المجنونة (إذا لم يمنعها من السوم والرعي) (، وإن منعها لا) تجوز التضحية بها.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 159
sir / head me / mein pathar lagne ya dimagh me / mein kere / kerte hone ki waja se / say chakrane chakranay wali bakri ki qurbani ka hokom / hokum

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Qurbani & Aqeeqa

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.