عنوان: قربانی کی قضا کا حکم(9568-No)

سوال: مفتی صاحب ! اگر گذشتہ قربانی ذمہ میں رہتی ہو تو کیا وقف قربانی میں حصہ ڈال کر اس کی قضاء کر سکتے ہیں؟

جواب: واضح رہے کہ قربانی کی قضا نہیں ہوتی، اس لیے اگر گزشتہ واجب قربانی ذمہ میں باقی ہو تو اس کے بدلے ایک متوسط بکرا یا بکری یا اس کی قیمت صدقہ کرنا لازم ہے، اس کے بدلے اگلے سال قربانی کرنے یا کہیں اجتماعی قربانی میں حصہ ملانے سے یہ واجب ذمہ سے ختم نہیں ہوتا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

المبسوط للسرخسي: (14/12، ط: دار المعرفة)

وأما ‌بعد ‌مضي ‌أيام ‌النحر فقد سقط معنى التقرب بإراقة الدم؛ لأنها لا تكون قربة إلا في مكان مخصوص وهو الحرم، وفي زمان مخصوص وهو أيام النحر.
ولكن يلزمه التصدق بقيمة الأضحية إذا كان ممن تجب عليه الأضحية؛ لأن تقربه في أيام النحر كان باعتبار المالية فيبقى بعد مضيها والتقرب بالمال في غير أيام النحر يكون بالتصدق، ولأنه كان يتقرب بسببين إراقة الدم والتصدق باللحم، وقد عجز عن أحدهما وهو قادر على الآخر فيأتي بما يقدر عليه..

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 701 Jun 08, 2022
qurbani ki qaza ka hokom / hokum

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Qurbani & Aqeeqa

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.