عنوان: ایک تہائی سے کم کٹی ہوئی دم والے جانور کی قربانی(9599-No)

سوال: مفتی صاحب ! اگر کسی جانور کی ایک تہائی سے کم دم کٹی ہو، تو کیا اس جانور کی قربانی درست ہے؟

جواب: جس جانور کی دم کا ایک تہائی یا اس سے زیادہ حصہ کٹا ہوا ہو، ایسے جانور کی قربانی درست نہیں ہے، البتہ دم کا ایک تہائی سے کم حصہ کٹے ہوئے جانور کی قربانی کرنا درست ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الھندیة: (298/5، ط: دار الفكر)

"وفي الجامع: أنه إذا کان ذهب الثلث أو أقلّ جاز، و إن کان أکثر لایجوز، و الصحیح أنّ الثلث وما دونه قلیل، وما زاد علیه کثیر، وعلیه الفتوی."

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 88
aik tehai / tehae / tehaye se / say cum katti hui / huwe dum wale / walay janwar ki qurbani?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Qurbani & Aqeeqa

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.