عنوان: مرحوم تایا کی میراث میں پانچ بھتیجوں اور چھ بھتیجیوں کا حصہ (9607-No)

سوال:
کیا فرماتے ہیں مفتیانِ کرام اس مسئلے سے متعلق ہے کہ مرحوم صالح محمد کا انتقال ہوا، جن کے ورثاء میں دو بھائی محمد اسماعیل، اور کمار ، اور ایک بہن رقیہ تھیں، پھر ان کے بعد بہن رقیہ کا انتقال ہوا، جس کے ورثاء میں صرف دو بھائی تھے: محمد اسماعیل اور کمار۔
اس کے بعد محمد اسماعیل کا انتقال ہوا، ان کے ورثاء میں درج ذیل افراد تھے: چار بیٹے : فقیر محمد، شاہجان، ہارون، سلیم اور چھ بیٹیاں: نسرین، زبیدہ، تسلیم، یاسمین، افشاں، ثریہ، ان کی اہلیہ کا انتقال ان کی زندگی میں ہی ہوگیا تھا۔
اس کے بعد کمار کا بھی انتقال ہوا، اس کے ورثاء میں صرف ان کا ایک بیٹا محمد رمضان تھا، ان کی اہلیہ کا بھی انتقال ان کی زندگی میں ہی ہوگیا تھا۔
ازراہ کرم مسئلہ کا ایسا حل فرمادیں، جس سے یہ بھی معلوم ہوجائے کہ اسماعیل اور کمار کی اولاد کا کتنا کتنا حصہ ہوگا؟

جواب: مرحومین کی تجہیز و تکفین کے جائز اور متوسط اخراجات، قرض کی ادائیگی اور اگر کسی غیر وارث کے لیے جائز وصیت کی ہو، تو ایک تہائی (1/3) میں وصیت نافذ کرنے کے بعد کل جائیداد منقولہ و غیر منقولہ کو ایک سو چالیس (140) حصوں میں تقسیم کیا جائے گا، جس میں سے اسماعیل کے چاروں بیٹوں میں سے ہر ایک کو دس (10)، چھ بیٹیوں میں سے ہر ایک بیٹی کو پانچ (5) اور کمار کے بیٹے کو ستر (70) حصے ملیں گے۔
اگر فیصد کے اعتبار سے تقسیم کریں، تو اسماعیل کے ہر ایک بیٹے کو % 7.14 فیصد، ہر ایک بیٹی کو %3.57 فیصد اور کمار کے بیٹے کو %50 فیصد ملے گا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

القرآن الکریم: (النساء، الایة: 176)
وَإِن كَانُواْ إِخْوَةً رِّجَالاً وَنِسَاءً فَلِلذَّكَرِ مِثْلُ حَظِّ الْأُنثَيَيْنِ....الخ

الدر المختار: (801/6، ط: دار الفکر)
فصل في المناسخة (مات بعض الورثة قبل القسمة للتركة صححت المسألة الأولى) وأعطيت سهام كل وارث (ثم الثانية) ۔۔۔۔الخ

المبسوط للسرخسی: (55/30، ط: دار المعرفة)
وإذا مات الرجل ولم تقسم تركته بين ورثته حتى مات بعض ورثته فالحال لا يخلو إما أن يكون ورثة الميت الثاني ورثة الميت الأول فقط أو يكون في ورثة الميت الثاني من لم يكن وارثا للميت الأول۔۔۔۔۔وأما إذا كان في ورثة الميت الثاني من لم يكن وارثا للميت فإنه تقسم تركة الميت الأول أولا لتبين نصيب الثاني، ثم تقسم تركة الميت الثاني بين ورثته۔۔۔الخ

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 47
marhom / marhoom taya ki meras / miras / meeras me / mein panch /5 bhatijo / bhatinon or che / chay / 6 bhatijiyon / bhatijyon ka hisa / hissa

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Inheritance & Will Foster

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.