عنوان: بڑے جانور میں ایک حصہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم اور ایک حصہ اپنے کسی مرحوم کی طرف سے قربانی کرنا (9667-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب! قربانی کے جانور کو جس کے سات حصے ہوتے ہیں، اس میں سے ایک حصہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے نام پر اور ایک حصہ اپنے مرحوم کے نام پر کرسکتے ہیں؟ براہ کرم رہنمائی فرمائیں۔

جواب: قربانی کے بڑے جانور کے سات حصوں میں سے ایک حصہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف سے اور ایک حصہ اپنے کسی مرحوم کی طرف سے قربان کرنا جائز ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

رد المحتار: (335/6، ط: سعید)

(قَوْلُهُ وَعَنْ مَيِّتٍ) أَيْ لَوْ ضَحَّى عَنْ مَيِّتٍ وَارِثُهُ بِأَمْرِهِ أَلْزَمَهُ بِالتَّصَدُّقِ بِهَا وَعَدَمِ الْأَكْلِ مِنْهَا، وَإِنْ تَبَرَّعَ بِهَا عَنْهُ لَهُ الْأَكْلُ لِأَنَّهُ يَقَعُ عَلَى مِلْكِ الذَّابِحِ وَالثَّوَابُ لِلْمَيِّتِ۔

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 750 Jul 05, 2022
bare / barey janwar me / mein aik hissa huzore akram sallalaho alihe wasallam or aik hissa apne kisi marhom ki taraf se / say qurbani karna

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Qurbani & Aqeeqa

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.