عنوان: قربانی کے جانور میں ایک حصہ صدقہ کی نیت سے شامل کرنا(9670-No)

سوال: مفتی صاحب! بڑے جانور کے سات حصوں میں سے ایک حصہ صدقے کی نیت سے کیا جائے تو کیا یہ جائز ہوگا؟ جبکہ مجھ پر قربانی واجب نہیں، اور اس لیے اس جانور میں میرا قربانی کا حصہ بھی نہیں ہے۔

جواب: قربانی کے بڑے جانور (اونٹ، گائے، بھینس وغیرہ) کے سات حصوں میں صدقہ کی نیت سے حصہ شامل کیا جاسکتا ہے۔ جو حصہ صدقہ کی نیت کا ہوگا، وہ صدقہ شمار ہوگا، باقی حصے قربانی کے شمار ہوں گے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

بدائع الصنائع: (72/5، ط: دار الکتب العلمیة)

ولو أرادوا القربة؛ الأضحية أو غيرها من القرب أجزأهم سواء كانت القربة واجبة أو تطوعا أو وجبت على البعض دون البعض، وسواء اتفقت جهات القربة أو اختلفت بأن أراد بعضهم الأضحية وبعضهم جزاء الصيد وبعضهم هدي الإحصار۔۔۔۔وهذا قول أصحابنا الثلاثة وقال زفر - رحمه الله -: لا يجوز إلا إذا اتفقت جهات القربة بأن كان الكل بجهة واحدة۔۔۔۔۔۔(ولنا) أن الجهات - وإن اختلفت صورة - فهي في المعنى واحد؛ لأن المقصود من الكل التقرب إلى الله - عز شأنه -

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 1082 Jul 05, 2022
qurbani k janwar me / mein aik hisa sadqey ki niat / niyat se shamil karna

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Qurbani & Aqeeqa

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.