عنوان: سونے کی زکوۃ کی ادائیگی میں کس جگہ کی قیمت کا اعتبار کیا جائے گا؟(10021-No)

سوال: اگر کسی پاس دس تولہ سونا ہو تو اس کی رہائش جس ملک کی ہو، اسی حساب سے زکوۃ دینے ہوگی؟

جواب: واضح رہے کہ جہاں قابل زکوة مال موجود ہو، اس کی زکوۃ اسی جگہ کی قیمت کے مطابق ادا کی جائے گی، اس معاملے میں زکوۃ دینے والے کی رہائش کا اعتبار نہیں ہے، لہذا سوال میں ذکر کرده صورت میں جہاں سونا موجود ہو، اسی ملک کی قیمت کے اعتبار سے زکوة ادا کی جائے گی۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

حاشية الطحطاوي علي مراقي الفلاح: (باب المصرف، 722/1، ط: دار الكتب العلمية)
تنبيه: المعتبر في الزكاة فقراء مكان المال، وفي الوصية مكان الموصي، وفي الفطرة مكان المؤدي عند محمد وهو الأصح لأن رؤسهم تبع لرأسه در والله سبحانه وتعالى أعلم وأستغفر الله العظيم.

الفتاوى الهندية: (مسائل شتى فى الزكاة، 180/1، ط: دار الفكر)
ويقومها المالك في البلد الذي فيه المال حتى لو بعث عبدا للتجارة إلى بلد آخر فحال الحول تعتبر قيمته في ذلك البلد ... كذا في فتح القدير ناقلا عن الفتاوى.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 619 Dec 08, 2022
soney / gold ki zakat ki adaigi me / mein kis jaga ki qeemat ka etebar kia jai / jaye ga?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Zakat-o-Sadqat

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.