عنوان: فارم ہاؤس والوں کا چھٹی کے دنوں میں عام دنوں کے بنسبت زیادہ کرایہ لینے کا حکم (10513-No)

سوال: فارم ہاؤس کی بکنگ کی عام دنوں میں فیس کم ہوتی ہے اور چھٹی کے دنوں ( ہفتہ اور اتوار) میں زیادہ فیس ہوتی ہے تو کیا یہ جائز ہے؟

جواب: کرایہ داری کے معاملہ میں شریعت مطہرہ نے کوئی لازمی حد مقرر نہیں کی ہے، بلکہ ہر شخص کو اپنی مملوکہ اشیاء خواہ جتنے بھی نفع پر ہو، بیچنے یا کرائے پر دینے کی اجازت دی ہے، بشرطیکہ اس میں جھوٹ اور دھوکہ دہی نہ ہو، نیز اس میں مروت، ہمدردی اور خیر خواہی کو بھی ملحوظ خاطر رکھنا چاہیے، لہذا اس اصول کو مد نظر رکھتے ہوئے فریقین باہمی رضامندی سے کرایہ/اجرت کی جتنی رقم مقرر کریں، شرعا جائز ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الفتاوى الهندية: (411/4، ط: دار الفكر)
وأما شرائط الصحة فمنها رضا المتعاقدين

بدائع الصنائع: (193/4، ط: دار الکتب العلمیة)
والأصل في شرط العلم بالأجرة قول النبي - صلى الله عليه وسلم - «من استأجر أجيرا فليعلمه أجره»

واللّٰه تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 329 May 17, 2023
farm house walo ka chuti / chutti / holyday k dino me / mein aam dino k banisbat ziada / ziyada karaya / rent lene / lenay ka hokom /hokum

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Employee & Employment

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.