عنوان: سالیوں کے سر پر ہاتھ پھیرنے کا حکم(10542-No)

سوال: میرا رشتہ ایک عالمہ سے ہوا ہے، میں خود بھی ایک عالم دین ہوں، جب کبھی آنا جانا ہوتا ہے تو میری سالیاں جو بالغ یا قریب البلوغ ہیں، سر پر ہاتھ پہیرنے کے لیے سر آگے کر دیتی ہیں، مجھے مجبورا ان کے سر پر ہاتھ رکھنا پڑتا ہے، پوچھنا یہ تھا کہ دوپٹہ کے اوپر سے سر پر ہاتھ رکھنے کی گنجائش ہے یا نہیں؟

جواب: واضح رہے کہ بیوی کے بہنیں شرعا نامحرم ہیں، لہذا اگر وہ بالغہ یا قریب البلوغ ہوں تو ان کے سر پر ہاتھ پھیرنے سے اجتناب کرنا چاہیے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الترغيب و الترهيب للمنذري: (26/3، ط: دار الكتب العلمية)

وَعَن معقل بن يسَار رَضِي الله عَنهُ قَالَ قَالَ رَسُول الله صلى الله عَلَيْهِ وَسلم لِأَن يطعن فِي رَأس أحدكُم بمخيط من ‌حَدِيد ‌خير لَهُ من أَن يمس امْرَأَة لَا تحل لَهُ. رَوَاهُ الطَّبَرَانِيّ وَالْبَيْهَقِيّ وَرِجَال الطَّبَرَانِيّ ثِقَات رجال الصَّحِيح.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 467 May 23, 2023
salio / saalion k sir per hath pherne / pherney ka hokom / hokum

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Prohibited & Lawful Things

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.