عنوان: دو بیٹوں اور تین بیٹیوں کے درمیان آٹھ لاکھ پچاس ہزار (850000) کی تقسیم (11022-No)

سوال: ہماری والدہ نے آٹھ لاکھ پچاس ہزار (850000) روپے چھوڑے ہیں، ہم تین بھائی اور تین بہنیں تھیں، ہم میں سے ایک بھائی اور والد کا والدہ کی زندگی میں ہی انتقال ہوگیا تھا، براہ کرم ان پیسوں کی شرعی تقسیم فرمادیں۔

جواب: مرحومہ والدہ کی تجہیز و تکفین کے جائز اور متوسط اخراجات، قرض کی ادائیگی اور اگر کسی غیر وارث کے لیے جائز وصیت کی ہو تو ایک تہائی (1/3) میں وصیت نافذ کرنے کے بعد کل رقم کو سات (7) حصوں میں تقسیم کیا جائے گا، جس میں سے دونوں لڑکوں میں سے ہر ایک لڑکے کو دو (2) اور تینوں لڑکیوں میں سے ہر ایک لڑکی کو ایک حصہ ملے گا۔
اس تقسیم کی رو سے آٹھ لاکھ پچاس ہزار (850000) روپوں میں سے ہر ایک لڑکے کو دو لاکھ بیالیس ہزار آٹھ سو ستاون روپے اور چودہ پیسے (2,42,857.14) اور ہر ایک بیٹی کو ایک لاکھ اکیس ہزار چار سو اٹھائیس روپے اور ستاون پیسے (1,21,428.57) ملیں گے۔
نوٹ: جس بیٹے کا والدہ کی زندگی میں انتقال ہوگیا تھا، اس کو والدہ کی میراث میں سے کچھ حصہ نہیں ملے گا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

القرآن الکریم: (النساء، الایة: 11)
يُوصِيكُمُ اللَّهُ فِي أَوْلاَدِكُمْ لِلذَّكَرِ مِثْلُ حَظِّ الأُنثَيَيْنِ ... الخ

رد المحتار: (758/6، ط: دار الفکر)
وشروطه ثلاثة: موت مورث حقيقةً أو حكمًا كمفقود أو تقديرًا كجنين فيه غرة، ووجود وارثه عند موته حيًّا حقيقةً أو تقديرًا كالحمل، والعلم بجهل إرثه.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 237 Sep 07, 2023
dou / 2 beto / beton or teen / 3 betion / betio k darmyan / darmiyan aath / 8 lakh pachas / 50 hazar ki taqseem / taqsim

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Inheritance & Will Foster

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.