عنوان: غزوہ ھند کے لیے "غزوہ" کا لفظ استعمال کرنا(101222-No)

سوال: السلام علیکم حضرت ! غزوہ اس جنگ کو کہتے ہیں کہ جس میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے خود شرکت فرمائی ہو تو غزوہ ہند کا کیا مطلب ہے؟

جواب: (1) "لفظِ غزوہ" کا استعمال ایسی جنگ کے لیے، جس میں حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے شرکت فرمائی ہو، مورخین اور سیرت نگاروں کی اصطلاح ہے ، ورنہ احادیث میں غزوہ کا لفظ ایسی جنگ کے ساتھ خاص نہیں ہے، جس میں حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے شرکت فرمائی ہو، بلکہ احادیث میں مطلقاً کسی بھی جنگ پر غزوہ کا اطلاق کیا گیا ہے، چاہے اس میں حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے شرکت فرمائی ہو یا نہیں فرمائی ہو، حتی کہ بعض جنگوں میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے شرکت نہیں فرمائی ہے، پھر بھی اسکو سیرت نگاروں نے غزوے کا ہی نام دیا ہے، چنانچہ "غزوہِ مؤتہ" میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے شرکت نہیں فرمائی ہے، پھر بھی اسے غزوہ ہی کہا جاتا ہے،
لہذا اس اعتبار (مطلق جنگ کے اعتبار) سے "غزوہِ ہند" کو غزوہ کہا جاتا ہے۔

(2 ) بعض علماء فرماتے ہیں کہ اس غزوہ میں حضور صلی الله عليه وسلم نے اپنی شرکت کی خواہش ظاہر کی تھی، اس لیے اس کو "غزوہ ھند" کہتے ہیں۔

(3) بعض علماء نے اس کو "غزوہ" کہنے سے منع بھی فرمایا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

فتح الباری: (279/7، ط: دار المعرفۃ)
والمغازي جمع مغزى يقال غزا يغزو غزوا ومغزى والأصل غزوا والواحدة غزوة وغزاة والميم زائدة وعن ثعلب الغزوة المرة والغزاة عمل سنة كاملة وأصل الغزو القصد ومغزى الكلام مقصده والمراد بالمغازي هنا ما وقع من قصد النبي صلى الله عليه وسلم الكفار بنفسه أو بجيش من قبله وقصدهم أعم من أن يكون إلى بلادهم أو إلى الأماكن التي حلوها حتى دخل مثل أحد والخندق

سنن النسائی: (42/6، ط: مکتب المطبوعات الاسلامیۃ)
عن أبي هريرة، قال: «وعدنا رسول الله صلى الله عليه وسلم غزوة الهند، فإن أدركتها أنفق فيها نفسي ومالي، فإن أقتل كنت من أفضل الشهداء، وإن أرجع فأنا أبو هريرة المحرر»

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 442
ghahzwah hind keliye ghazwah ka lafz istemaal kerna , Using the word "Ghazwa" for Ghazwa Hind

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Miscellaneous

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.