عنوان: تیس سال پہلے بغیر ٹکٹ ریل گاڑی کے سفر کی تلافی کرنے کا طریقہ(13449-No)

سوال: مفتی صاحب! معلوم یہ کرنا تھا کہ چند دوستوں نے تیس سال پہلے ٹرین کا سفر کیا تھا اور ٹرین کا کرایہ ادا نہیں کیا تھا۔ اب وہ ٹرین کا کرایہ ادا کرنا چاہ رہے ہیں تو کس حساب سے وہ ٹرین کا کرایہ ادا کریں گے اور اس کی کیا صورت ہوگی؟ وضاحت فرما دیجیے۔

جواب: پوچھی گئی صورت میں اگر آپ لوگوں نے ٹکٹ نہیں خریدا تھا اور بغیر کرایہ ادا کیے سفر کیا تھا تو آپ لوگوں کو چاہیے کہ جتنے افراد نے بغیر ٹکٹ کے سفر کیا تھا، ان ٹکٹوں کی اُس وقت کی مالیت کے بقدر اوپن ٹکٹ خرید کر انہیں ضائع کردیں، اس طرح ریلوے کے ادارے کو وہ پیسے پہنچ جائیں گے اور آپ لوگوں کا ذمہ بھی فارغ ہوجائے گا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

بدائع الصنائع: (396/7، ط: دار الكتب العلمية)
أما حكم القرض فهو ثبوت الملك للمستقرض في المقرض للحال، وثبوت مثله في ذمة المستقرض للمقرض للحال، وهذا جواب ظاهر الرواية۔

رد المحتار: (848/3، ط: سعید)
مطلب الديون تقضى بأمثالها
(قوله: بل وصف للذمة إلخ) ولهذا قيل: إن الديون تقضى بأمثالها على معنى أن المقبوض مضمون على القابض؛ لأن قبضه بنفسه على وجه التملك ولرب الدين على المدين مثله، فالتقى الدينان قصاصًا وتمامه في البحر.

و فیه ایضاً: (162/5، ط: سعید)
وإن استقرض دانق فلوس أو نصف درهم فلوس، ثم رخصت أو غلت لم يكن عليه إلا مثل عدد الذي أخذه، وكذلك لو قال أقرضني عشرة دراهم غلة بدينار، فأعطاه عشرة دراهم فعليه مثلها، ولا ينظر إلى غلاء الدراهم، ولا إلى رخصها۔

واللّٰه تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 277 Dec 19, 2023
30 saal pehle baghair ticket rail gari k safar ki talafi karne ka tariqa

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Characters & Morals

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.