عنوان: قرآنِ مجید کی تلاوت کرنے کے بعد "صدق الله العظیم" کہنے کا حکم (14668-No)

سوال: مفتی صاحب! سوال یہ ہے کہ قرآن پاک کی تلاوت کے بعد "صدق اللہ العظیم" کہا جاتا ہے۔ کیا حضور نبی کریم ﷺ، صحابہ کرامؓ یا تابعینؒ بھی تلاوتِ قرآن کے بعد ایسا کہا کرتے تھے؟

جواب: امام قرطبیؒ نے قرآنِ مجید کی تلاوت سے فارغ ہونے پر "صدق الله العظیم" کہنا تلاوتِ قرآن کے آداب میں سے لکھا ہے، کیونکہ اس کے پڑھنے والا اللہ تعالی کے کلام پر اپنے مضبوط ایمان کا اظہار کرتا ہے، لہذا تلاوتِ قرآن سے فارغ ہونے پر سنت یا لازم سمجھے بغیر "صدق الله العظیم" کہنا درست ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

تفسير القرطبي: (27/1، ط: دار الكتب المصرية)

ومن حرمته إذا انتهت قراءته أن يصدق ربه، ويشهد بالبلاغ لرسوله صلى الله عليه وسلم، ويشهد على ذلك أنه حق، فيقول: صدقت رب وبلغت رسلك، ونحن على ذلك من الشاهدين، اللهم اجعلنا من شهداء الحق، القائمين بالقسط، ثم يدعو بدعوات.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 128 Feb 09, 2024
quran majeed ki tilawat karne ke bad "sadaqallah hul azeem" kehne ka hukum

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Interpretation of Quranic Ayaat

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.