عنوان: دورانِ نماز کمرہ میں اپنی موجودگی کا احساس دلانے کے لیے کھانسنا (15754-No)

سوال: مفتی صاحب! کمرے میں نماز ادا کرتے وقت باہر سے کوئی پکارے تو اپنی موجودگی کا احساس دلانے کے لیے نمازی کھانسے، کیا اس کھانسنے سے نماز فاسد ہوجائے گی؟

جواب: واضح رہے کہ کسی صحیح غرض اور مقصد کے لیے نماز میں کھانسنے کی وجہ سے نماز فاسد نہیں ہوتی۔
پوچھی گئی صورت میں دورانِ نماز کھانسنا چونکہ ایک صحیح غرض کی وجہ سے ہے کہ دوسرے لوگوں کو معلوم ہوجائے کہ وہ نماز کی حالت میں ہے، لہذا اس کی وجہ سے نماز فاسد نہیں ہوگی۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الدر المختار: (618/1، ط: دار الفكر)

(والتنحنح) بحرفين (بلا عذر) أما به بأن نشأ من طبعه فلا (أو) بلا (غرض صحيح) فلو لتحسين صوته أو ليهتدي إمامه أو للإعلام أنه في الصلاة فلا فساد على الصحيح.

واللّٰه تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 94 Feb 28, 2024
doran e namaz kamre mein apni mojudgi ka ehsas dilane ke liye khansna

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Salath (Prayer)

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.