عنوان: جنازے کی چارپائی کے چاروں کونوں میں سورۂ ملک پڑھنا (15892-No)

سوال: مفتی صاحب! کیا جنازے کی چارپائی کے چاروں اطراف پر سورہ ملک پڑھنا جائز ہے؟ احادیث کی روشنی میں اس کی کیا حیثیت ہے؟ کیا یہ من گھڑت بات ہے؟

جواب: واضح رہے کہ سورۂ ملک کی احادیث مبارکہ میں بڑی فضیلت بیان کی گئی ہے، لیکن باوجود تلاش اور کوشش کے ایسی کوئی حدیث (صحیح، حسن، ضعیف، وغیرہ) حدیث کی کسی بھی معتبر کتاب میں نہیں ملی، جس میں جنازے کی چارپائی کے چاروں کونوں میں سورۂ ملک پڑھنے کا ذکر ہو ،لہذا اس عمل کو لازم و ضروری سمجھنا یا فضیلت کا باعث سمجھ کر کرنا درست نہیں ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

مسند أحمد: (رقم الحديث: 26033، 157/43، ط: مؤسسة الرسالة)
عن عائشة، قالت: قال رسول الله صلى الله عليه وسلم: " ‌من ‌أحدث ‌في ‌أمرنا ما ليس منه، فهو رد " .

الاعتصام للشاطبي: (53/1، ط: دار ابن عفان، السعودية)
ومنها: التزام العبادات المعينة في أوقات معينة لم يوجد لها ذلك التعيين في الشريعة، كالتزام صيام يوم النصف من شعبان وقيام ليلته.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 142 May 03, 2024
janaze janazay ki charpai ke charon kono mein sorah mulk parhna

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Beliefs

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.