عنوان: ذی الحجہ کا چاند نظر آنے کے بعد بال اور ناخن کاٹنا(1890-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب سوال یہ ہے کہ میں سعودیہ میں مقیم ہوں تو کیا آج جمعہ کے دن بال وغیرہ کٹوا سکتا ہوں اور قربانی کا بھی ارادہ ہے؟

جواب: واضح رہے کہ کل سعودیہ میں ماہ ذی الحجہ کا چاند نظر آگیا ہے، لہذا قربانی کرنے والے کے لیے مستحب یہ ہے کہ اگر ناخن اور بال کاٹے ہوئے چالیس دن نہ ہوئے ہوں، تو ناخن اور بال نہ کاٹے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

مرقاۃ المفاتیح: (1080/3، ط: دار الفکر)
وعن أم سلمة - رضي الله عنها - قالت: قال رسول الله - صلى الله عليه وسلم -: «إذا دخل العشر، وأراد بعضكم أن يضحي فلا يمس من شعره وبشره شيئا، وفي رواية: فلا يأخذن شعرا، ولا يقلمن ظفرا، وفي رواية: من رأى هلال ذي الحجة وأراد أن يضحي، فلا يأخذ من شعره ولا من ظفاره» . رواه مسلم.

سنن النسائی: (211/7، ط: مکتب المطبوعات الاسلامیۃ)
'عن أم سلمة، عن النبي صلى الله عليه وسلم قال: «من رأى هلال ذي الحجة، فأراد أن يضحي، فلا يأخذ من شعره، ولا من أظفاره حتى يضحي»۔'

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 739 Aug 02, 2019
zilhajja ka chand nazar aanay kay baad baal or nakhun kaatna, Cutting hair and nails after the sighting of zil-Hijjah moon

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Qurbani & Aqeeqa

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.