عنوان: واجب اور نفلی صدقہ میں فرق(2095-No)

سوال: مفتی صاحب ! نفلی صدقہ اور واجب صدقہ میں کیا فرق ہے؟

جواب: واضح رہے کہ واجب صدقہ اس صدقہ کو کہا جاتا ہے، جو انسان نے اپنے اوپر کسی وجہ سے لازم کرلیا ہو، جیسے نذر اور کفارات وغیرہ، یا جو شریعت کی طرف سے لازم ہوا ہو، جیسے صدقہ فطر وغیرہ۔
صدقاتِ واجبہ غریبوں(غیر صاحب نصاب) کا حق ہے، اسے اپنے یا اپنی اہلیہ کے اوپر، اپنے اصول یعنی دادا، دادی، نانا، نانی، یا اپنی فروع یعنی اپنی اولاد، پوتا، پوتی، نواسہ، نواسی کے اوپر استعمال نہیں کرسکتے ہیں، اور نہ ہی یہ کسی امیر، سید، یا کافر شخص کو دیا جا سکتا ہے، نیز واجب صدقات میں مال کا کسی کو مالک بنانا شرط ہے، اسی لئے صدقات واجبہ کو مسجد یا کسی اور وقف کی جگہ پر بھی استعمال نہیں کر سکتے ہیں، جبکہ نفلی صدقات عام حالات میں کی جانے والی خیرات کو کہتے ہیں جو نفلی ہو اور کسی وجہ سے اس پر واجب نہ ہو، اس کو غریب، امیر اور اصول و فروع پر بھی استعمال کیا جا سکتا ہے اور یہ مال وقف کی جگہ جیسے مسجد وغیرہ میں بھی استعمال ہو سکتا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الھدایہ: (223/1، ط: رحمانیہ)
ولا یدفع المزکی زکوۃ مالہ الی ابیہ وجدہ وان علا ولا الی ولدہ وولد ولدہ وان اسفل۔

الجوھرۃ النیرہ: (کتاب الزکوۃ، باب فی بیان مصارف الزکوۃ، 129/1)
لا تدفع الی غنی وفیھا ولا یدفع الی بنی ھاشم ولا فیھا ولا یدفع المزکی زکوتہ الی ابیہ وجدہ وان علا ولا الی ولدہ وان اسفل و فیھا۔۔۔۔۔ ولا یبنی بھا مسجد ولا یکفن بھا میت۔

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 2598 Sep 14, 2019
wajib or / aur nafli sadqa me / mein faraq, The difference between obligatory and supererogatory / nafli charity

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Zakat-o-Sadqat

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.