عنوان: کسی خاص طبقے کے لئے جمع کیا گیا چندہ اگر بچ جائے تو اس کا کیا کرنا چاہیے؟(100340-No)

سوال: السلام علیکم ، ذہنی معذور بچوں کو تحفہ دینے کے لیے کچھ لوگوں سے پیسے لیے تھے، جس میں سے تقریباً 4000 بچ گئے ہیں، کیا یہ مسجد کی تعمیر یا کسی اور رفاہی کام میں استعمال ہوسکتے ہیں ؟

جواب: واضح ہو کہ بقیہ چار ھزار روپے چندہ دینے والوں کی اجازت کے بغیر کسی دوسری جگہ استعمال کرنا درست نہیں ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الاشباہ و النظائر: (243/1، ط: دار الکتب العلمیۃ)
لا يجوز التصرف في مال غيره بغير إذنه ولا ولاية إلا في مسألة في السراجية: يجوز للولد والوالد الشراء من مال المريض ما يحتاج إليه بغير إذنه.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 197
kisi khas tabqay kay liye jama kiya gaya chanda agar bach jaye to uska kia karna chahiye?, if the funds collected for a specific group of people is leftover, what should be done with them?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Miscellaneous

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.