عنوان: رش کی وجہ سے طواف زیارت بارہ ذی الحجہ سے پہلے نہ کرسکے (3774-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب! اگر کوئی حاجی بہت زیادہ بھیڑ کی وجہ سے ذی الحجہ کی بارہ تاریخ تک طواف زیارت نہ کرسکے، بلکہ بعد میں ذی الحجۃ کی تیرہ تاریخ کو طواف زیارت کر لے، تو کیا اس پر دم لازم آئے گا؟

جواب: واضح رہے کہ طواف زیارت ذی الحجہ کی بارہ تاریخ کے غروب آفتاب سے پہلے تک کرلینا واجب ہے، اگر کسی نے اس کے بعد طواف زیارت کیا، تو دم لازم آئے گا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

البحر العمیق: (347/2، ط: سعید)
وأما الواجب فہو فعلہ في یوم من الأیام الثلاثۃ عند أبي حنیفۃ حتی لو أخرہ عنہا مع الإمکان لزمہ دم، وقد ورد في الحدیث أن النبي صلی اللّٰہ علیہ وسلم طاف بعد صلاۃ الظہر یوم النحر للرکن۔

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 640 Mar 17, 2020
Rush, rash, ki, wajah, say, se, tawaf e ziarat, tawaf-e-ziarat, 12, barah, zil hajj, zil-hajj, pehlay, pehle, na, naa, kar, sakay, sake, Unable to perform Tawaf e ziarat before 12 Zil Hajj due to rush, twelve, zil-hajj, zil, hajj, tawaf-e-ziarat, tawaf-e-ziarah

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Hajj (Pilgrimage) & Umrah

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.