عنوان: مصائب سے پریشان ہو کر خودکشی کرنا (105147-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب! اگر کوئی شخص اپنی زندگی میں موجود مصائب سے نجات پانے کے لیے خودکشی کا راستہ اختیار کرتا ہے، تو اس کے بارے میں کیا حکم ہے؟ کیا وہ خود کشی کرنے کی وجہ سے کافر ہو جاتا ہے؟

جواب: واضح رہے کہ خود کشی کرنا حرام اور بدترین گناہ کبیرہ ہے، لیکن خودکشی کرنے والا دائرہ اسلام سے خارج نہیں ہوتا، اس وجہ سے اس کی نماز جنازہ پڑھی جاتی ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کذا فی الدر المختار:

من قتل نفسه ولو عمدًا یغسل ویصلی علیه. به یفتی. وإن کان أعظم وزرًا من قاتل غیره".

(در مختار ج:2 ص:211، باب صلاة الجنازة)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 270
masaaib say pareshaan ho kar khud kushi karna

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Beliefs

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © AlIkhalsonline 2021.