عنوان: حسنات اور سیئات برابر ہوں، تو کیا معاملہ ہوگا؟ (105158-No)

سوال: کسی شخص کے قیامت کے دن اعمال نامے تولے جائیں، اور اس کی حسنات اور سیئات دونوں برابر ہوں، تو کیا وہ جنت جائے گا یا دوزخ میں؟

جواب: قیامت کے دن جس شخص کے اعمال نامے میں حسنات اور سیئات دونوں برابر ہوں، تو ایک قول کے مطابق یہ شخص کچھ عرصے کے لیے لیے "مقام اعراف" میں رہے گا، اس کے بعد جنت میں داخل کر دیا جائے گا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کذا فی تفسیر ابنِ کثیر:

سئل رسول الله صلى الله عليه وسلم عمن استوت حسناته وسيئاته فقال أولئك أصحاب الأعراف۔

(تفسیر ابنِ کثیر ج:3 ض:160)

وفی تفسیر در منثور:

عن ابنِ عباس رضی اللہ عنہ قال: ھن استوت حسناته وسيئاته کان من اصحاب الاعراف۔

(تفسیر در منثور ج:3ص:89)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 301
hasanat or sayyiaat barabar hon to kia muamla hoga?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Beliefs

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com