عنوان: مرتد کو حالت اسلام میں کیے گئے نیک اعمال کا ثواب ملے گا؟ (105159-No)

سوال: اگر کوئی مسلمان اسلام میں اچھے اعمال کرتا رہا ہو، پھر وہ مرتد ہو جائے، تو کیا مرتد کو اپنے پہلے کیے ہوئے اچھے اعمال کا آخرت میں ثواب ملے گا یا نہیں؟

جواب: واضح رہے کہ مرتد ہونے کے بعد انسان کے حالت اسلام میں کیے گئے تمام اعمال ضائع ہو جاتے ہیں۔

قرآن مجید میں ارشاد باری تعالیٰ ہے:

وَمَنْ یَّرْتَدِدْ مِنْکُمْ عَنْ دِیْنِہٖ فَیَمُتْ وَہُوَ کَافِرٌ فَاُولٰئِکَ حَبِطَتْ اَعْمَالُہُمْ فِی الدُّنْیَا وَالْاٰخِرَۃ۔
ترجمہ:
اور اگر تم میں سے کوئی شخص اپنا دین چھوڑ دے، اور کافر ہونے کی حالت ہی میں مرے، تو ایسے لوگوں کے اعمال دنیا اور آخرت دونوں میں اکارت ہو جائیں گے۔

لہذا مرتد کو اپنے کسی نیک عمل کا ثواب نہیں ملے گا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

قال اللہ تبارک وتعالیٰ:

وَمَنْ یَّرْتَدِدْمِنْکُمْ عَنْ دِیْنِہٖ فَیَمُتْ وَہُوَکَافِرٌفَاُولٰئِکَ حَبِطَتْ اَعْمَالُہُمْ فِی الدُّنْیَا وَالْاٰخِرَۃ ۔

(سورۃ البقرۃ آیت:217)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 209
murtad ko haalat e islam mai kiye gaye naik aamaal ka sawaab milayga?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Beliefs

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © AlIkhalsonline 2021.