عنوان: صدقہ کے لیے رکھی ہوئی رقم کو دوسری رقم سے تبدیل کرنا(5549-No)

سوال: مفتی صاحب! اگر کوئی شخص روز کے چند روپے صدقے کی نییت سے الگ رکھ دیتا ہو اور گھر کے ہر فرد کو پتا ہو کہ اس دراز میں صدقے کی رقم ہے، اور جب کوئی ضرورت مند یا فقیر آتا ہے، سب وہاں سے اٹھا کر دیے دیتے ہیں تو جب رقم ہزار سے زائد ہو جائے تو وہ ان کھلے ہزار کی جگہ بندھے ہزار رکھ سکتے ہیں؟ بندھے ہوئے کسی ضرورت مند کو ہی دیے جائیں گے، کھلے اپنے استعمال میں ہوں گے، کیونکہ ان کے بدلے بندھے رکھے تھے، کیا ایسا کر سکتے ہیں؟

جواب: جی ہاں! اگر کسی ضرورت (مثلا بندھے روپوں کے لیے) صدقہ کی علیحدہ رکھی ہوئی رقم میں سے لے کر، اس کے بدلے میں دوبارہ اتنی رقم رکھ دی جائے، تو ایسا کرنے میں کوئی حرج نہیں ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الدر المختار مع رد المحتار: (270/2)

"ولا يخرج عن العهدة بالعزل بل بالأداء للفقراء".
(قوله: ولا يخرج عن العهدة بالعزل) فلو ضاعت لا تسقط عنه الزكاة".

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 1489 Nov 03, 2020
sadqa kay liye rakhi hoi raqam ko doosri raqam say tabdeel karna, Amount reserved for charity be exchanged for another amount

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Zakat-o-Sadqat

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.