عنوان: دم دینے سے کیا مراد ہے؟(106265-No)

سوال: مفتی صاحب! میں نے حج اور عمرہ سے متعلق کتابوں میں پڑھا ہے کہ حج یا عمرہ میں بعض غلطیاں ہونے کی صورت میں دم دینا واجب ہوتا ہے، براہ مہربانی مجھے دم کے بارے میں بتادیں کہ دم دینے سے کیا مراد ہوتا ہے؟

جواب: حج یا عمرہ میں بعض غلطیوں کی وجہ سے ایک بکرا یا دنبہ وغیرہ حرم کی حدود میں ذبح کرنا واجب ہوتا ہے، اسے "دم" کہتے ہیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی ارشاد الساری:

اعلم أنه حيثما أطلق الدم في عبارات القوم من أصحاب المناسک ، فالمراد الشاة، فھي تجزئ في كل موضع أي من مواضع الجنايات .

(فصل في أحكام الدماء، ج: ، ص: 553، ط: الامدادیۃ)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 344
dam dene say kia murad hai?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Hajj (Pilgrimage)

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com