عنوان: کیا بیوٹی پارلر جاکر لیزر ٹریٹمنٹ (Laser Treatment)کے ذریعے زیر ناف اور بغل کے بال صاف کروانا جائز ہے؟(106570-No)

سوال: مفتی صاحب ! کیا عورتیں پالر سے زیرِ ناف اور بغل کے بالوں کی lazer treatment کرواسکتی ہیں؟

جواب: مسلمان عورت کے لیے دوسری مسلمان عورت کے سامنے ناف سے لے کر گھٹنوں سمیت حصہ چھپانا فرض ہے، شرعی عذر کے بغیر ان اعضاء میں سے کوئی عضو دوسری عورت کے سامنے کھولنا یا کسی عورت کا دوسری عورت کے ان اعضاء کو چھونا جائز نہیں ہے، لہٰذا زیر ناف کے بال کسی دوسری عورت سے صاف کروانا جائز نہیں ہے، جبکہ بغل کے بال صاف کروانے کی گنجائش ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی البدائع الصنائع:

ولا یجوز لہا أن تنظر إلی ما بین سرتہا إلی الرکبۃ۔

(ج:4، ص:299، ط: زکریا)

کما فی الفتاویٰ التاتارخانیۃ:

یجوز أن ینظر الرجل إلی الرجل إلی جمیع جسدہ إلا إلی عورتہ، وعورتہ ما بین سرتہ حتی یجاوز رکبتیہ … تنظر المرأۃ إلی المرأۃ کنظر الرجل إلی الرجل۔ وعن أبي حنیفۃ أن نظر المرأۃ إلی المرأۃ کنظر الرجل إلی محارمہ والأول أصح۔

(ج:18، ص:90، ط: زکریا)

اللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Print Full Screen Views: 507
kai beauty parlor ja kar laser treatment kay zariye zeer e naaf baal or bahal kay baal saaf karwana jaiz hai?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Women's Issues

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.