عنوان: کیا حج کے دنوں میں عورت حیض (ماہواری) کو روکنے والی گولیاں کھاسکتی ہے؟(106960-No)

سوال: مفتی صاحب ! میں حج کے لئے جانا چاہتی ہوں، لیکن حج کے دنوں میں مجھے ماہواری کے ایام شروع ہونے کا اندیشہ ہے، کیا میں حج کے دنوں میں حیض (ماہواری) کو روکنے والی گولیاں کھاسکتی ہوں، تاکہ آسانی سے حج ادا کرسکوں؟

جواب: اگر کسی دینی مصلحت کی غرض سے حیض (ماہواری) کو روکنے والی گولیاں استعمال کی جائیں، تو ایسا کرنا جائز ہے، لہذا صورتِ مسئولہ میں آپ حج کے دنوں میں حیض (ماہواری) کو روکنے والی گولیاں کھاسکتی ہیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی فتاوی اللجنۃ الدائمۃ:

س3: عن حكم استعمال حبوب منع الحيض في رمضان والحج لتتمكن من أداء العبادة.

جـ3: الحمد لله وحده والصلاة والسلام على رسوله وآله وصحبه. . وبعد:
لا يظهر لنا مانع من ذلك إذا كان الغرض من استعمالها ما ذكر، وأنه لا يترتب على استعمالها أضرار صحية. والله أعلم.

(ج: 5، ص: 441، ط: رئاسة إدارة البحوث العلمية والإفتاء)

وفیہ ایضا:

يجوز للمرأة أن تأكل حبوبا لمنع العادة الشهرية عنها أثناء أدائها للمناسك.

(ج: 11، ص: 191، ط: رئاسة إدارة البحوث العلمية والإفتاء)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 214
kia hajj kay dino mai aourat haiz ko rouknay ki wali golian kha sakti hai?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Hajj (Pilgrimage)

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © AlIkhalsonline 2021.