عنوان: کیا داڑھی کو بھینس کی دم کہنا کفر ہے؟(107176-No)

سوال: میرے اور میری بیوی کے درمیان جھگڑا ہو رہا تھا، تو بیوی نے میری داڑھی کے بارے میں غصہ سے کہا کہ "یہ داڑھی نہیں، بلکہ بھینس کی دم ہے"، تو کیا اس طرح کہنے سے میری بیوی کافر ہوجائے گی؟

جواب: صورت مسئولہ میں اگر آپ کی بیوی نے مذکورہ الفاظ حضور اکرم ﷺ کی سنت کو حقیر سمجھتے ہوئے یا استخفاف اور استھزاء کے طور پر کہے ہیں، تو آپ کی بیوی دائرہ اسلام سے خارج ہوگئی اور اگر مذکورہ الفاظ سنتِ نبوی کو حقیر سمجھتے ہوئے یا استخفاف اور استھزاء کے طور پر نہیں کہے ہیں، تو آپ کی بیوی دائرہ اسلام سے خارج نہیں ہوئی، البتہ آپ کی بیوی کو آئندہ اس طرح کے الفاظ کہنے سے اجتناب کرنا چاہیے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی الشامیۃ:

ولاعتبار التعظیم المنافی للاستخفاف کفر الحنفیۃ بالفاظ کثیرۃ وافعال تصدر من المنتھکین لدلاتھا علی الاستخفاف بالدین ……قلت :ویظھر من ھذا ان ماکان دلیل الاستخفاف یکفر بہ۔

(ج: 4، ص: 222، ط: دار الفکر)

وفی البحرالرائق:

ویکفر ……باستخفافہ بسنۃ من السنن۔

(ج: 5، ص: 121)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 179

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Beliefs

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com