عنوان: سگریٹ اور تمباکو کی کمائی مسجد میں لگانا(107189-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب میرا یہ سوال ہے کہ ایک شخص سگریٹ اور تمباکو کا کاروبار کرتا ہے اس کی کمائی مسجد میں لگانا کیسا ہے ؟

جواب:  سگریٹ کی خرید و فروخت بذات خود جائز ہے، لیکن مضرصحت ہونے کی بناء پر اس کا کاروبار اختیار نہ کرنا بہتر ہے، البتہ اس سے حاصل ہونے والی آمدنی کو حرام نہیں کہا جاسکتا، لہذا اس کی کمائی کو مسجد میں لگانا جائز ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کذا فی الدر المختار مع رد المحتار :

فیفھم حکم التنباک وھو اباحۃ علی المختار والتوقف وفیہ اشارۃ الی عدم تسلیم اسکارہ وتفتیرہ واضرارہ.

(کتاب الاشربۃ، ج : 5، ص : 407، ط : دارالفکر)

کذا فی رد المحتار :

ﻗﻠﺖ: ﻭﺃﻟﻒ ﻓﻲ ﺣﻠﻪ ﺃﻳﻀﺎ ﺳﻴﺪﻧﺎ اﻟﻌﺎﺭﻑ ﻋﺒﺪ اﻟﻐﻨﻲ اﻟﻨﺎﺑﻠﺴﻲ ﺭﺳﺎﻟﺔ ﺳﻤﺎﻫﺎ (اﻟﺼﻠﺢ ﺑﻴﻦ اﻹﺧﻮاﻥ ﻓﻲ ﺇﺑﺎﺣﺔ ﺷﺮﺏ اﻟﺪﺧﺎﻥ) ﻭﺗﻌﺮﺽ ﻟﻪ ﻓﻲ ﻛﺜﻴﺮ ﻣﻦ ﺗﺂﻟﻴﻔﻪ اﻟﺤﺴﺎﻥ، ﻭﺃﻗﺎﻡ اﻟﻄﺎﻣﺔ اﻟﻜﺒﺮﻯ ﻋﻠﻰ اﻟﻘﺎﺋﻞ ﺑﺎﻟﺤﺮﻣﺔ ﺃﻭ ﺑﺎﻟﻜﺮاﻫﺔ ﻓﺈﻧﻬﻤﺎ ﺣﻜﻤﺎﻥ ﺷﺮﻋﻴﺎﻥ ﻻ ﺑﺪ ﻟﻬﻤﺎ ﻣﻦ ﺩﻟﻴﻞ ﻭﻻ ﺩﻟﻴﻞ ﻋﻠﻰ ﺫﻟﻚ ﻓﺈﻧﻪ ﻟﻢ ﻳﺜﺒﺖ ﺇﺳﻜﺎﺭﻩ ﻭﻻ ﺗﻔﺘﻴﺮﻩ ﻭﻻ ﺇﺿﺮاﺭﻩ، ﺑﻞ ﺛﺒﺖ ﻟﻪ ﻣﻨﺎﻓﻊ، ﻓﻬﻮ ﺩاﺧﻞ ﺗﺤﺖ ﻗﺎﻋﺪﺓ اﻷﺻﻞ ﻓﻲ اﻷﺷﻴﺎء اﻹﺑﺎﺣﺔ ﻭﺃﻥ ﻓﺮﺽ ﺇﺿﺮاﺭﻩ ﻟﻠﺒﻌﺾ ﻻ ﻳﻠﺰﻡ ﻣﻨﻪ ﺗﺤﺮﻳﻤﻪ ﻋﻠﻰ ﻛﻞ ﺃﺣﺪ، ﻓﺈﻥ اﻟﻌﺴﻞ ﻳﻀﺮ ﺑﺄﺻﺤﺎﺏ اﻟﺼﻔﺮاء اﻟﻐﺎﻟﺒﺔ ﻭﺭﺑﻤﺎ ﺃﻣﺮﺿﻬﻢ ﻣﻊ ﺃﻧﻪ ﺷﻔﺎء ﺑﺎﻟﻨﺺ اﻟﻘﻄﻌﻲ، ﻭﻟﻴﺲ اﻻﺣﺘﻴﺎﻁ ﻓﻲ اﻻﻓﺘﺮاء ﻋﻠﻰ اﻟﻠﻪ ﺗﻌﺎﻟﻰ ﺑﺈﺛﺒﺎﺕ اﻟﺤﺮﻣﺔ ﺃﻭ اﻟﻜﺮاﻫﺔ اﻟﻠﺬﻳﻦ ﻻ ﺑﺪ ﻟﻬﻤﺎ ﻣﻦ ﺩﻟﻴﻞ ﺑﻞ ﻓﻲ اﻟﻘﻮﻝ ﺑﺎﻹﺑﺎﺣﺔ اﻟﺘﻲ ﻫﻲ اﻷﺻﻞ، ﻭﻗﺪ ﺗﻮﻗﻒ اﻟﻨﺒﻲ - ﺻﻠﻰ اﻟﻠﻪ ﻋﻠﻴﻪ ﻭﺳﻠﻢ - ﻣﻊ ﺃﻧﻪ ﻫﻮ اﻟﻤﺸﺮﻉ ﻓﻲ ﺗﺤﺮﻳﻢ اﻟﺨﻤﺮ ﺃﻡ اﻟﺨﺒﺎﺋﺚ ﺣﺘﻰ ﻧﺰﻝ ﻋﻠﻴﻪ اﻟﻨﺺ اﻟﻘﻄﻌﻲ، ﻓﺎﻟﺬﻱ ﻳﻨﺒﻐﻲ ﻟﻹﻧﺴﺎﻥ ﺇﺫا ﺳﺌﻞ ﻋﻨﻪ ﺳﻮاء ﻛﺎﻥ ﻣﻤﻦ ﻳﺘﻌﺎﻃﺎﻩ ﺃﻭ ﻻ ﻛﻬﺬا اﻟﻌﺒﺪ اﻟﻀﻌﻴﻒ ﻭﺟﻤﻴﻊ ﻣﻦ ﻓﻲ ﺑﻴﺘﻪ ﺃﻥ ﻳﻘﻮﻝ ﻫﻮ ﻣﺒﺎﺡ، ﻟﻜﻦ ﺭاﺋﺤﺘﻪ ﺗﺴﺘﻜﺮﻫﻬﺎ اﻟﻄﺒﺎﻉ؛ ﻓﻬﻮ ﻣﻜﺮﻭﻩ ﻃﺒﻌﺎ ﻻ ﺷﺮﻋﺎ ﺇﻟﻰ ﺁﺧﺮ ﻣﺎ ﺃﻃﺎﻝ ﺑﻪ - ﺭﺣﻤﻪ اﻟﻠﻪ ﺗﻌﺎﻟﻰ ۔

(ج : 6، ص : 459، ط : دارالکفر)

کذا فی موسوعۃ الفقہ الاسلامی:

فكل ما خلق الله الأصل فيه الحل والإباحة ما لم يرد دليل يحرمه. وكل ما صنع الإنسان من الآلات والأجهزة فالأصل فيه الحل والإباحة ما لم يرد فيه دليل يحرمه.

(ج: 2، ص: 293، ط: بیت الافکار الدولیۃ)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Views: 73

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Rights & Etiquette of Mosques

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com