عنوان: حضرات صحابہ کرام رضوان اللہ تعالی علھیم اجمعین "معیارِ حق" ہیں(7248-No)

سوال: کیا حضور اکرم ﷺ کے صحابہ کرام رضوان اللہ تعالی علھیم اجمعین "معیار حق" اور حق و باطل کی کسوٹی ہیں؟ اور اگر ہیں تو جو شخص اس کا انکار کرے، اس کے بارے میں کیا حکم ہے؟

جواب: حضور اکرم ﷺ کے صحابہ کرام رضوان اللہ تعالی عنہم اجمعین امت کے لیے حق اور باطل کے درمیان "معیارِ حق" ہیں اور حق و باطل جانچنے کی کسوٹی ہیں اور ان کا اتباع دنیا و آخرت میں کامیابی اور نجات کا سبب ہے، لہذا جو شخص صحابہ کرام رضوان اللہ تعالی علیہم اجمعین کے "معیار حق" ہونے کا انکار کرے تو ایسا شخص فاسق و فاجر ہے اور اہل سنت والجماعت سے خارج اور گمراہ ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

القرآن الکریم: (التوبۃ، الآیۃ: 100)
وَالسّٰبِقُونَ الاَوَّلُونَ مِنَ الْمُهَاجِرِيْنَ وَالأنْصَارِ وَالَّذِيْنَ اتَّبَعُوْهُمْ بِإِحْسَانٍ رَّضِيَ اللهُ عَنْهُمْ وَرَضُوْا عَنْهُ وَأَعَدَّ لَهُمْ جَنّٰتٍ تَجْرِيْ تَحْتَهَا الأنْهٰرُ....الخ

و قولہ تعالی: (البقرۃ، الآیۃ: 5)
أُولٰئِكَ عَلٰى هُدًى مِّن رَّبِّهِمْ وَأُولٰئِكَ هُمُ الْمُفْلِحُوْنَo

و قولہ تعالی: (البقرۃ، الآیۃ: 137)
فَاِنۡ اٰمَنُوۡا بِمِثۡلِ مَاۤ اٰمَنۡتُمۡ بِہٖ فَقَدِ اہۡتَدَوۡا ۚ وَ اِنۡ تَوَلَّوۡا فَاِنَّمَا ہُمۡ فِیۡ شِقَاقٍ ۚ فَسَیَکۡفِیۡکَہُمُ اللّٰہُ ۚ وَ ہُوَ السَّمِیۡعُ الۡعَلِیۡمُo

و قولہ تعالی: (الحجرات، الآیۃ: 7)
أُولٰئِكَ هُمُ الرَّاشِدُوْنَo

و قولہ تعالی: (البینہ، الآیۃ: 8)
رَضِيَ اللهُ عَنْهُمْ وَرَضُوْا عَنْهُط....الخ

مشکوۃ المصابیح: (باب الاعتصام بالکتاب و السنۃ، ص: 30)
عن عبدا ﷲ بن عمرؓ قال قال رسول ﷲﷺ لیأتین علی امتی کمااتی علی بنی اسرائیل … وان بنی اسرائیل تفرقت علی ثنتین وسبعین ملۃ وتفترق امتی علی ثلث وسبعین ملۃ کلھم فی النار الاملۃ واحدۃ قالوا من ھی یا رسول اﷲ قال ما اناعلیہ واصحابی ۔

و فیھا ایضا: (باب الاعتصام بالکتاب و السنۃ، ص: 32)
عن ابن مسعودؓ قال من کان مستنا فلیستن بمن قد مات فان الحی لاتؤمن علیہ الفتنۃ اولئک اصحاب محمدﷺ کانوا افضل ھذہ الامۃ ابرھا قلوبا …وتمسکوا بما استطعتم من اخلاقھم وسیرھم فانھم کانوا علی الھدی المستقیم ۔

و فیھا ایضا: (باب مناقب الصحابۃ، ص: 554)
عن عمر بن الخطابؓ قال سمعت رسول ﷲﷺ یقول سألت ربی عن اختلاف اصحابی من بعدی فاوحی الی یامحمد ان اصحابک عندی بمنزلۃ النجوم فی السماء بعضھا اقوی من بعض ولکل نور فمن اخذ بشیٔ مما ھم علیہ من اختلافھم فھو عندی علی ھدی قال وقال رسول ﷲﷺ اصحابی کالنجوم فبایھم اقتدیتم اھتدیتم۔

و فیھا ایضا: (باب مناقب ابی بکر و عمر، ص: 560)
عن حذیفۃؓ قال قال رسول ﷲ ﷺ انی لا ادری ما بقائی فیکم فاقتدوا بالذین من بعدی ابی بکر وعمر

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 2539 Apr 09, 2021
kia hazrat e sahaba kiram rizwanu allahi alaihim ajmaeen maiyaar e haq hain?, Are the Companions, may Allah be pleased with them, the "standard of right / truth"?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Beliefs

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.