عنوان: تراویح میں غلطی ہوجانے کی صورت قرآت دوبارہ کرنے کا حکم (107309-No)

سوال: حضرتت ! اگر تراویح میں دو کے بجائے غلطی سے تین رکعات پڑھ لیں تو ان تین رکعات میں کی گئی قرآت دوبارہ کرنی ہو گی یا محض رکعات دوبارہ پڑھنا کافی ہے؟

جواب: اگر تراویح کی نماز میں دو کی بجائے تین رکعت پڑھ لی گئیں اور آخر میں سجدہ سہو بھی نہیں کیا، ایسی صورت میں اگر دوسری رکعت پر قعدہ نہیں کیا، تو وہ تین رکعت تراویح میں شمار نہیں ہوں گیں، لہذا ان دو رکعتوں کا وقت کے اندر اعادہ ضروری ہوگا، البتہ ان تین رکعتوں میں کی گئی تلاوت کا اعادہ تراویح میں لازم ہوگا۔
اور اگر دو رکعت کے بعد قعدہ کر لیا تھا، تو دو رکعت میں کی گئی تلاوت کے اعادہ کی ضرورت نہیں ہے، صرف تیسری رکعت کی تلاوت کا اعادہ لازم ہوگا۔ نیز وقت کے اندر ان دو رکعتوں کا اعادہ بھی ضروری ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

لما فی الفتاوی الہندیہ :

"ولو صلى التطوع ثلاث ركعات ولم يقعد على رأس الركعتين، الأصح أنه تفسد صلاته".
(الفتاوی الھندیۃ: 3 /484)

وفی الشامیۃ :
"(قوله: أو ترك قعود أول) ؛ لأن كون كل شفع صلاة على حدة يقتضي افتراض القعدة عقيبه؛ فيفسد بتركها، كما هو قول محمد، وهو القياس، لكن عندهما لما قام إلى الثالثة قبل القعدة فقد جعل الكل صلاةً واحدةً شبيهةً بالفرض، وصارت القعدة الأخيرة هي الفرض، وهو الاستحسان، وعليه فلو تطوع بثلاث بقعدة واحدة كان ينبغي الجواز اعتبارًا بصلاة المغرب، لكن الأصح عدمه؛ لأنه قد فسد ما اتصلت به القعدة وهو الركعة الأخيرة؛ لأن التنفل بالركعة الواحدة غير مشروع فيفسد ما قبلها".
(رد المحتار: 2 /32)

وفی الجوهرة النيرة على مختصر القدوري (1/ 98):
"وإذا فسد الشفع وقد قرأ فيه لايعتد بما قرأه فيه، ويعيد القراءة؛ ليحصل الختم في الصلاة الجائزة".

وفی الفتاوى الهندية (1/ 117):
"وإذا تذكروا أنه فسد عليهم شفع من الليلة الماضية فأرادوا القضاء بنية التراويح يكره".

(وکذا فی فتاویٰ دارالافتاء بنوری تاؤن: فتویٰ رقم : 144109200944)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Print Full Screen Views: 268
taraweeh mai ghalti hojanay ki soorat mai qirat dobara karne ka hukum

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Taraweeh Prayers

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.