عنوان: عدت کے دوران کن اشخاص سے پردہ کرنا چاہیے؟(107463-No)

سوال: مفتی صاحب ! عدت کے دوران عورت کو کن کن مردوں سے پردہ کرنا چاہیے؟

جواب: عدت اور غیر عدت دونوں میں پردے کے احکام ایک جیسے ہیں، عام اوقات میں جن مردوں سے پردہ کا حکم ہے، ان سے عدت میں بھی پردہ کرنے کا حکم ہے، اور جن سے عام اوقات میں پردہ نہیں ہے، ان سے عدت میں بھی پردہ نہیں ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

قال اللہ تعالی:

وَلَا يُبْدِينَ زِينَتَهُنَّ إِلَّا لِبُعُولَتِهِنَّ أَوْ آبَائِهِنَّ أَوْ آبَاءِ بُعُولَتِهِنَّ أَوْ أَبْنَائِهِنَّ أَوْ أَبْنَاءِ بُعُولَتِهِنَّ أَوْ إِخْوَانِهِنَّ أَوْ بَنِي إِخْوَانِهِنَّ أَوْ بَنِي أَخَوَاتِهِنَّ

(سورۃ النور، آیت نمبر: 31)

کذا فی الھندیۃ:

ﻭﻻ ﺑﺄﺱ ﻟﻠﺮﺟﻞ ﺃﻥ ﻳﻨﻈﺮ ﻣﻦ ﺃﻣﻪ ﻭاﺑﻨﺘﻪ اﻟﺒﺎﻟﻐﺔ ﻭﺃﺧﺘﻪ ﻭﻛﻞ ﺫﻱ ﺭﺣﻢ ﻣﺤﺮﻡ منھن ﻛﺎﻟﺠﺪاﺕ ﻭاﻷﻭﻻﺩ ﻭﺃﻭﻻﺩ اﻷﻭﻻﺩ ﻭاﻟﻌﻤﺎﺕ ﻭاﻟﺨﺎﻻﺕ.

(ج5، ص328، ط: دارالفکر، بیروت)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 450

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Iddat(Period of Waiting)

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com