عنوان: کیا گرگٹ کو مارنے پر ثواب ملتا ہے؟(107520-No)

سوال: میں نے سنا ہے کہ گرگٹ کو مارنے پر ثواب ملتا ہے، کیا یہ بات درست ہے اور کیا اس کا ثبوت ہے؟

جواب: جی ہاں ! گرگٹ کو مارنا باعثِ ثواب ہے اور یہ بات روایات سے ثابت ہے اور وجہ اس کی یہ ہے کہ جب ابراہیم علیہ السلام کو آگ میں ڈالا گیا تھا، تو گرگٹ نے پھونک مار کر مزید آگ بھڑکانے کی کوشش کی تھی، چنانچہ حضرت ام شریک رضی اللہ تعالیٰ عنہا کی روایت ہے کہ حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے گرگٹ کو قتل کرنے کا حکم فرمایا، کیونکہ وہ ابراہیم علیہ السلام پر آگ کو پھونک مارتا تھا اور چونکہ اس کا شمار موذی جانوروں میں ہوتا ہے اور حدیث شریف میں بھی اس کو مارنے کا حکم دیا گیا ہے، لہذا اس کو مارنا جائز ہے۔

دلائل:

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


کما فی شرح النووی علی الصحیح لمسلم:

(أن النبي صلى الله عليه وسلم أمرها بقتل الأوزاغ) وفي رواية أمر بقتل الوزغ وسماه فويسقا وفي رواية من قتل وزغة في أول ضربة فله كذا وكذا حسنة ومن قتلها في الضربة الثانية فله كذا وكذا حسنة لدون الأولى وإن قتلها في الضربة الثالثة فله كذا وكذا حسنة لدون الثانية وفي رواية من قتل وزغا في أول ضربة كتب له مائة حسنة وفي الثانية دون ذلك وفي الثالثة دون ذلك وفي رواية في أول ضربة سبعين حسنة قال أهل اللغة الوزغ وسام أبرص جنس فسام أبرص هو كباره واتفقوا على أن الوزغ من الحشرات المؤذيات وجمعه أوزاغ ووزغان وأمر النبي صلى الله عليه وسلم بقتله وحث عليه ورغب فيه لكونه من المؤذيات۔۔۔الخ

(ج: 14، ص: 236)

وفی المشکوۃ:

عن ام شریک ان رسول ﷲﷺ امر بقتل الوزغ وقال کان ینفخ علی ابراھیم۔۔۔عن ابی ھریرۃ ص ان رسول ﷲﷺ قال من قتل وزغا فی اول ضربہ کتبت لہ مائۃ حسنۃ وفی الثانیۃ دون ذلک وفی الثالثۃ دون ذلک۔

(ص: 361)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 564
kia girgit ko maarne par sawab milta hai?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Prohibited & Lawful Things

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.