عنوان: کیا چھ کلمات اور ان کے نام احادیث سے ثابت ہیں؟(107527-No)

سوال: ہمیں بچپن میں چھ کلمات کلمہ طیبہ، شہادت، تمجید، توحید، استغفار اور رد کفر ناموں سمیت سکھائیں جاتے ہیں، کیا یہ کلمات اور ان کے نام احادیث سے ثابت ہیں اور ان کے پڑھنے پڑھانے کا کیا حکم ہے؟

جواب: واضح رہے کہ چھ کلمات میں سے شروع کے چار کلمات کے الفاظ بعینہ احادیث میں موجود ہیں اور باقی دو کلمے بعینہ الفاظ کے ساتھ موجود نہیں ہے، البتہ اس بات کا احتمال ہے کہ مختلف دعاؤں سے ان کے دو کلموں کے الفاظ لیے گئے ہوں۔

ان کلمات کے نام اور ترتیب کسی حدیث سے ثابت نہیں ہے، لیکن اس بات کا امکان ہے کہ امتیاز اور آسانی کے لئے ان کلمات کے نام اور ترتیب لوگوں میں مشہور ہوئے ہوں، تاہم ان چھ کلمات کا پڑھنا اور پڑھانا ضروری نہیں ہے، لیکن چونکہ ان کلمات میں وارد ادعیہ و اذکار کے بہت سے فضائل احادیث میں آئے ہیں، لہذا بہتر یہ ہے کہ انہیں پڑھا اور پڑھایا جائے۔

دلائل:

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


کما فی الترغیب و الترھیب:

عن ابی ھریرۃ رضی اللہ تعالی عنہ قال قال رسول ﷲﷺ ماقال عبد لاالہ الا ﷲ قط مخلصا الا فتحت لہ ابواب السماء حتی یفضی الی العرش ما اجتنبت الکبائر۔

(الترغيب في قول لا إله إلا الله وما جاء في فضلها، ج: 2، ص: 267)

وفیہ ایضاً:

عن عبد ﷲ بن عمروبن العاص رضی اللہ تعالی عنہ ان رسول ﷲﷺ قال ان ﷲ یستخلص رجلا من امتی علی رؤوس الخلائق یوم القیامۃ فینشر علیہ تسعۃ وتسعین سجلا کل سجل مثل مد البصر ……… فیقول ﷲ تعالی بلی ان لک عندنا حسنۃ فانہ لاظلم علیک الیوم فتخرج بطاقۃ فیھا اشھد ان لاالہ الا ﷲ واشھدان محمدا عبدہ ورسولہ۔

(الترغيب في قول لا إله إلا الله وما جاء في فضلها، ج: 2، ص: 270)

وفیہ ایضاً:

عن ایوب ص عن النبیﷺ قال من قال لاالہ الا ﷲ وحدہ لاشریک لہٗ لہ الملک ولہ الحمد وھو علی کل شیٔ قدیر کان کعدل محرر او محررین۔

(الترغيب في قول لا إله إلا الله وما جاء في فضلها، ج: 2، ص: 271)

وفیہ ایضاً:

عن ابن عمر رضی ﷲ عنھما قال سمعت رسول ﷲﷺ یقول من قال لاالہ الا ﷲ وحدہ لاشریک لہ الملک ولہ الحمد یحیی و یمیت وھو الحی الذی لایموت بیدہ الخیر وھوعلی کل شیٔ قدیر لایرید بہ الا وجہ ﷲ ادخلہ ﷲ بھا جنات النعیم۔

(الترغيب في قول لا إله إلا الله وما جاء في فضلها، ج: 2، ص: 272)

وفیہ أیضاً:

وعن رجل من أصحاب النبیﷺ قال: أفضل الکلام سبحٰن ﷲ والحمد ﷲ ولاالہ الا ﷲ و ﷲ اکبر۔

(الترغيب في التسبيح والتكبير والتهليل والتحميد على اختلاف أنواعه، ج: 2، ص: 275)

وفیہ أیضا:

عن ابی موسیٰ ؓ أن النبیﷺ قال لہ :قل لا حول ولاقوۃ الا باللہ فانھا کنز من کنوز الجنۃ۔

(الترغيب في قول لا حول ولا قوة إلا بالله، ج: 2، ص: 290)

کذا فی نجم الفتاوی:

(ج: 1، ص: 637)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 369
kia chay kalimaat or un kay naam ahadees mai saabit hain?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Interpretation and research of Ahadees

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.