عنوان: بیوہ کا عدت کے دوران کرونا ویکسین لگوانے کے لئے باہر جانا(107625-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب ! ہندہ کو پہلی ویکسین شوہر کی بیماری میں لگی اور جب دوسری ڈوز کا وقت آیا ہے، تو شوہر کا انتقال ہو گیا، تو کیا ہندہ جو کہ اب عدت میں ہے، ویکسین لگوانے کے لئے گھر سے نکل سکتی ہے؟ اگر ہاں تو وقت کی بھی کوئی قید ہے یا دن رات میں کسی بھی وقت جا سکتی ہے؟ ۔براہ کرم جلدی جواب سے نوازیں، کیونکہ کل ہندہ کا دوسری ویکسین کا دن ہے۔ جزاکم اللہ خیرا

جواب: واضح رہے کہ عدت کے دوران عورت کیلئے عذر شرعی کے بغیر گھر سے باہر نکلنا (چاہے دن ہو یا رات) جائز نہیں ہے، اور مذکورہ ویکسین لگوانا شرعی عذر میں داخل نہیں ہے، کیونکہ یہ ویکسین بیماری کی وجہ سے نہیں لگائی جاتی، بلکہ بیماری سے پہلے ہی حفاظت کے واسطے لگائی جاتی ہے، لہذا اس کے لگانے کے لیے ہسپتال جانا جائز نہیں ہے، یا تو گھر پر ہی ویکسین لگوانے کا انتظام کیا جائے، یا پھر عدت مکمل ہو جانے کے بعد ویکسین لگوائی جائے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کذا فی کذا فی الدر مع الشامیہ:

(وتعتدان) أي معتدة طلاق وموت (في بيت وجبت فيه) ولايخرجان منه (إلا أن تخرج أو يتهدم المنزل، أو تخاف) انهدامه، أو (تلف مالها، أو لاتجد كراء البيت) ونحو ذلك من الضرورات فتخرج لأقرب موضع إليه".

(ج:3، ص:536)

کذا فی فتاویٰ دار الافتاء جامعہ بنوری تاؤن:

(فتوی نمبر:144208200960)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 366

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Iddat(Period of Waiting)

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © AlIkhalsonline 2021.