عنوان: کیا داڑھی منڈانے والے شخص کی گواہی معتبر ہے؟(107670-No)

سوال: اگر کوئی شخص داڑھی منڈاتا ہو یا کترواتا ہو، تو کیا ایسے شخص کی گواہی معتبر ہے؟

جواب: داڑھی منڈانا یا کتروانا گناہ کبیرہ اور فسق و فجور ہے اور فاسق و فاجر شخص کی گواہی معتبر نہیں ہوتی ہے، لہذا داڑھی منڈانے یا کتروانے والے شخص کی گواہی بھی معتبر نہیں ہے، البتہ چونکہ موجودہ معاشرہ دینی انحطاط کا شکار ہے، لہذا اگر کوئی داڑھی والا گواہ موجود نہ ہو اور کسی کی حق تلفی کا اندیشہ ہو، تو ایسے داڑھی منڈانے یا کتروانے والے شخص کی گواہی قبول کی جاسکتی ہے، جو معتبر ہو اور جس کے سچا ہونے پر قاضی کو اعتماد ہو۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی الشامیۃ:

وامّا شہادۃ الفاسق فان تحری القاضی الصدق فی شھادتہ تقبل والا فلا۔۔۔ قال فی الفتاویٰ القاعدۃ ھٰذا اذا غلب علٰی ظنہ صدقہ وھو مما یحفظ درر اول کتاب القضاء وظاہر قولہ وھو مما یحفظ اعتمادہ۔

(کتاب الشھادۃ، ج: 4، ص: 414، ط: رشیدیۃ)

وفی بدائع الصنائع:

ومنھا العدالۃ لقبول الشھادۃ علی الاطلاق فانھا لاتقبل علی الاطلاق دونھا لقولہٖ تعالیٰ: مِنَّنْ تَرْضَوَنَ مِنَ الشُّھَدَآئِ وَالشَّاھِدَ المرضی ھُوَ الشَّاھد العدل۔

(کتاب الشھادت، فصل فی الشرائط فی الاصول، ج: 6، ص: 268، ط: رشیدیۃ)

کذا فی فتاوی حقانیۃ:

(ج: 5، ص: 480)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Print Full Screen Views: 200
kia dhaari mundanay walay ki gawahi mutabar hai?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Miscellaneous

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.