عنوان: بیوی کو زکوۃ دینا(107674-No)

سوال: مفتی صاحب ! کیا شوہر اپنی بیوی کو زکوٰۃ دے سکتا ہے، اس حال میں کہ اس کی بیوی نکاح سے پہلے ہی مقروض ہوکر آئی ہو؟

جواب: واضح رہے کہ شوہر اور بیوی کے منافع عادتاً مشترک ہوتے ہیں، اور دونوں ایک دوسرے کی چیزوں سے عام طور پر استفادہ کرتے ہیں، اس لیے شوہر کا اپنی بیوی کو زکوۃ دینا جائز نہیں ہے۔

دلائل:

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


کذا فی الھدایہ:

ولاید فع المزکی زکوٰۃ مالہ الی ابیہ الخ ولا الی امراء تہ للاشتراک فی المنافع عادۃ ولا تدفع المراۃ الی زوجھا عند ابی حنیفۃ لما ذکرنا وقالا تدفع الیہ لقولہ علیہ السلام لک اجران اجرالصدقۃ واجر الصلۃ قالہ لا مراء ۃ ابن مسعود وقد سألتہ عن التصدق علیہ قلنا ھو محمول علی النافلۃ۔

(باب من یجوز دفع الصدقات الیہ، ج۱، ص ۱۸۸، رحمانیہ)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 226
biwi ko zakta dena/zakath

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Zakat-o-Sadqat

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.